The news is by your side.

Advertisement

حکومت کو ٹف ٹائم دینے کے لیے آصف زرداری سرگرم، مولانا فضل الرحمان سے ملاقات

اسلام آباد: حکومت کو ٹف ٹائم دینے کے لیے پی پی شریک چیئرمین آصف زرداری سرگرم ہو گئے، مولانا فضل الرحمان سے ملاقات میں حکومت کے خلاف قرارداد لانے سے متعلق امور پر بات چیت کی۔

تفصیلات کے مطابق آصف علی زرداری نے مولانا فضل الرحمان کے ساتھ ان کے گھر پر ملاقات کی، ملاقات میں سیاسی صورتِ حال، اپوزیشن کو قومی اسمبلی میں فعال بنانے سے متعلق بات چیت کی گئی۔

ضروری نہیں کہ حکومت گرائی جائے، حکومت گرانا مقصد نہیں: اپوزیشن رہنماؤں کا مؤقف

ذرائع کا کہنا ہے کہ ملاقات میں ایوان میں حکومت کے خلاف قرارداد لانے سے متعلق امور پر بھی غور کیا گیا، ملاقات میں نیئر بخاری اور راجہ پرویز اشرف بھی موجود تھے۔

ملاقات کے بعد آصف زرداری نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ 10 سال تک جمہوریت کے لیے مل کر کام کیا، جمہوری طاقتیں کم زور نظر آ رہی ہیں، اب یہ ملک چلتا ہوا نظر نہیں آ رہا ہے، جمہوریت کی بقا کے لیے ہم اپنا فرض نبھاتے رہیں گے۔

پیپلز پارٹی کے رہنما نے کہا کہ ضروری نہیں کہ حکومت کو گرایا جائے، حکومت گرانا مقصد نہیں بلکہ اس کے طور طریقے جمہوری نہیں۔

انھوں نے مزید کہا کہ سب دوستو ں کے ساتھ مل کر بات کی جا سکتی ہے، ہم نے ہمیشہ کوششیں کی کہ غیر جمہوری قوتوں کو موقع نہ ملے، مولانا فضل الرحمان ن لیگ سے رابطہ کریں گے۔


یہ بھی پڑھیں:  میں این آر او کا کبھی بینفشری نہیں رہا، آصف زرداری


میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ تمام جماعتیں مشترکہ لائحہ عمل طے کریں گی، مقصد حکومت گرانا نہیں بلکہ جمہوریت کو چلانا ہے، یہ جعلی مینڈیٹ ہے انھیں حکومت کرنے کا حق نہیں ہے۔

جے یو آئی (ف) کے سربراہ نے مزید کہا کہ یہ وہ پاکستان نہیں جس کے لیے ہم نے قربانیاں دیں تھیں، یہ وہ پاکستان نہیں جس کے لیے ہم نے ضیا الحق سے پنگے لیے تھے۔

انھوں نے کہا کہ راجہ ظفر الحق سے ملاقات ہوئی ہے، اپوزیشن مل کر آئندہ کا لائحہ عمل تیار کرے گی، ہم سب کا مؤقف ہے کہ مل کر چلا جائے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں