The news is by your side.

Advertisement

پاکستان کے رقبے سے بڑا سیارچہ زمین سے خطرناک حد تک قریب

پاکستان کے کل رقبے جتنا بڑا سیارچہ زمین سے خطرناک حد تک قریب آگیا۔ سیارچے کو رات کے اوقات میں بغیر کسی ٹیلی اسکوپ کے باآسانی دیکھا جاسکتا ہے۔

ویسٹا نامی یہ سیارچہ ہمارے نظام شمسی کے اندر موجود چوتھا بڑا معلوم سیارچہ ہے۔ یہ زمین سے صرف 10 کروڑ 60 لاکھ میل کے فاصلے پر موجود ہے۔

اس سیارچے کا رقبہ پاکستان کے کل رقبے سے معمولی سا زیادہ یعنی 8 لاکھ کلو میٹر ہے۔ سیارچے میں 13 میل بلند پہاڑ بھی موجود ہے۔

یہ سیارچہ نہایت آسانی سے آسمان پر دیکھا جاسکتا ہے کیونکہ اس کی بیرونی سطح روشنی کو چاند سے زیادہ منعکس کرتی ہے۔

اگر یہ سیارچہ زمین سے ٹکرا گیا تو زمین سے زندگی کا خاتمہ ہوسکتا ہے۔

اس کو سمجھنے کے لیے یہ کہنا کافی ہوگا کہ وہ سیارچہ جو زمین سے ٹکرا کر ڈائنو سارز کے نسل کے خاتمے کی وجہ بنا، صرف 10 سے 15 کلومیٹر چوڑا تھا، جبکہ ویسٹا کی چوڑائی 252 کلو میٹر ہے۔

ناسا کا کہنا ہے کہ خوش قسمتی سے زمین سے انتہائی قریب ہونے کے باجوود یہ اس راستے پر نہیں ہے جس پر زمین سے اس کا تصادم ہوسکے۔

خیال رہے کہ گزشتہ برس بھی دو سیارچے زمین کے انتہائی قریب سے گزرے ہیں۔

اپریل 2017 کو 2014 جے او 25 نامی سیارچہ زمین سے محض 11 لاکھ میل کے فاصلے سے گزرا تھا۔ یہ فاصلہ زمین اور چاند کے درمیان فاصلے سے 4.6 گنا زیادہ تھا۔

ستمبر 2017 میں فلورنس نامی سیارچہ زمین سے 43 لاکھ 91 ہزار میل کے فاصلے سے گزرا تھا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں