The news is by your side.

Advertisement

تین چینی خلا بازوں نے ملکی تاریخ کے طویل اور مشکل مشن کے لیے زمین چھوڑ دی (ویڈیو)

بیجنگ: چینی اسپیس اسٹیشن کی تعمیر کے لیے 3 چینی خلا باز ملکی تاریخ کے طویل اور مشکل ترین مشن پر زمین پر چھوڑ کر اپنی منزل پر پہنچ گئے۔

تفصیلات کے مطابق چین کے تین خلا بازوں پر مشتمل عملہ شِن زھو- 12 نامی خلائی جہاز کے ذریعے کامیابی سے نئے چینی خلائی اسٹیشن کے کور ماڈیول پر پہنچ گیا ہے۔

چین نے جمعرات کو تین خلا بازوں کو شِن زھو- 12 خلائی جہاز کے ذریعے شمال مغربی صحرائے گوبی میں قائم جیوچھوان سیٹلائٹ لانچ سینٹر سے خلا میں بھیجا تھا، ان خلا بازوں میں 56 سالہ نائی ہیشنگ، 54 سالہ لیو بومنگ اور 45 سالہ تانگ ہونگ بو شامل تھے۔

یہ خلا باز 3 ماہ تک ’ٹیانہے‘ کے رہائشی کوارٹر میں قیام کریں گے، اور وہیں اپنے قیام کے دوران تجربات اور مرمت جیسے کام کے ساتھ ہی اگلے برس شروع ہونے والے 2 مزید ماڈیول کے لیے اسٹیشن تیار کریں گے۔

چینی حکام کے مطابق شِن زھو- 12 روانگی کے تقریباََ 7 گھنٹوں بعد ہی چین کے نئے خلائی اسٹیشن تیان گونگ کے ٹیانہے کے کور ماڈیول میں کامیابی سے داخل ہو گیا تھا۔

چین کا ایک اور بڑا کارنامہ، انسان بردار خلائی جہاز اڑان کے لیے تیار

واضح رہے کہ چین خلا میں اپنا پہلا خلائی مرکز تعمیر کرنے کی کوشش کر رہا ہے، جس کا نام تیان گونگ اسپیس سینٹر ہے، یہ اسٹیشن زمین سے 380 کلومیٹر (236 میل) کی بلندی تعمیر کیا جا رہا ہے، اور اس کا آغاز رواں برس اپریل میں تینوں ماڈیولز میں سے سب سے بڑے ٹیانہے کے لانچ کے ساتھ ہوا تھا۔

شِن زھو- 12 خلا میں موجود چینی خلائی اسٹیشن کو مکمل کرنے کے لیے ضروری 11 مشنز میں سے تیسرا مشن ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں