The news is by your side.

Advertisement

کیا آسٹریلیا نے کرونا کا علاج دریافت کرلیا؟

سڈنی: آسٹریلوی ڈاکٹرز نے دو ادویات کے ذریعے کرونا وائرس کا علاج دریافت کرنے کا دعویٰ کردیا۔

غیرملکی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق آسٹریلیا میں کرونا وائرس کے مریضوں کا دو موجود دوائیوں کے ذریعے علاج کیا گیا جس کے بعد وہ مریض صحت یاب ہوگئے۔

ڈیلی میل کی رپورٹ کے مطابق کرونا وائرس کے مریضوں کا علاج خفیہ ٹرائل کے طور پر کیا گیا، انہیں ایچ آئی وی کی دوائی کالیٹرا اور ملیریا کے علاج کی دوائی ہائیڈرو آکسیلوکلورن دی گئیں۔

آسٹریلوی ڈاکٹر کا کہنا ہے کہ یہ ٹیسٹ اتنا کامیاب رہا ہے کہ قریبی 50 اسپتالوں میں اب وہی دوائیں کرونا وائرس کے مریضوں کو دی جائیں گی۔

مزید پڑھیں: کیا کرونا وائرس لیب میں‌ بنا؟ سائنس دانوں نے وضاحت کردی

یونیورسٹی آف کوئنز لینڈ سینٹر برائے کلینیکل ریسرچ کے ڈائریکٹر پروفیسر ڈیوڈ پیٹرسن جو رائل برسبین اور ویمن اسپتال میں کنسلٹنٹ متعدی بیماریوں کے معالج بھی ہیں اس ٹیم کا حصہ تھے۔

پروفیسر پیٹرسن نے کہا کہ یہ دوائیں کرونا وائرس کے مریضوں کو صحت یاب کرنے کی صلاحیت رکھتی ہیں، 50 اسپتال ان دواؤں کے استعمال کا بہترین طریقہ طے کرنے کی کوشش کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ ان ادویات کا ایک دوسرے سے مقابلہ بھی ہے کہ کون سی دوائی کم سے کم دن میں کرونا کے مریض کو صحت یاب کرتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ یہ دوائیاں مریضوں کو گولیوں کے طور پر دی جاسکتی ہیں، ہم نے یہ دوائیں تیار کرلی ہیں۔ یاد رہے کہ آسٹریلوی حکومت نے کرونا وائرس کے علاج کے پیش نظر 13 ملین ڈالرز مختص کیے ہیں۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں