ایان علی کے وارنٹ گرفتاری عبوری طور پر معطل -
The news is by your side.

Advertisement

ایان علی کے وارنٹ گرفتاری عبوری طور پر معطل

اسلام آباد: سپریم کورٹ نےایان علی کےوارنٹ گرفتاری عبوری طورپرمعطل کر دیئے، ایان علی کے وکیل نے ورانٹ گرفتاری کو سپریم کورٹ میں چیلنج کیا تھا، وکیل کا کہنا تھا کہ کسٹم انسپکٹر قتل کیس کی وجہ سے ایان علی کی جان کو خطرہ ہے۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں کسٹم انسپکٹر اعجاز قتل کیس کی سماعت جسٹس اعجاز افضل کی سربراہی میں دو رکنی بینچ نے کی، ایان علی کے وکیل نے ورانٹ گرفتاری کو سپریم کورٹ میں چیلنج کیا۔

ایان علی کے وکیل لطیف کھوسہ نے درخواست میں مؤقف اختیار کیا گیا کہ کسٹم انسپکٹر قتل کیس کی وجہ سے ایان علی کی جان کو خطرہ ہے، کسٹم انسپکٹر اعجاز کے قتل کے موقع پر ماڈل ایان علی جیل میں تھی، ان پر قتل کا الزام بے بنیاد ہے، درخواست میں عدالت سے استدعا کی گئی کہ مجسٹریٹ کے جاری کردہ ورانٹ گرفتاری منسوخ کیے جائیں، یہ وارنٹ ایان علی کی گرفتاری کےلیے کرنسی اسمگلنگ کیس کے تفتیشی افسر چوہدری اعجاز کے قتل کیس میں جاری کیے گئے تھے۔

مزید پڑھیں : کسٹم انسپکٹر قتل کیس، ایان علی کے وارنٹ گرفتاری جاری

وکیل کا کہنا تھا کہ کسٹم انسپکٹر اعجاز قتل میں ایان علی براہ راست نامزد نہیں ، انہیں انتقامی کارروائی کا نشانہ بنایا جا رہا ہے ۔

کیس میں ایان کا دفاع کرتے ہوئے لطیف کھوسہ اپنے ہی لفظوں کے جال میں پھنس گئے, لطیف کھوسہ کا عدالت میں کہنا تھا کہ انہیں ایان علی کی پرواہ نہیں بلکہ وہ تو قانون کی بات کررہے ہیں، لطیف کھوسہ کےاس جملے کو جسٹس گلزار نے پکڑلیا اور کہا کہ آپ کہتے ہیں کہ آپ کو ایان علی کی پرواہ نہیں، ایان علی یہاں ہوتیں تو آپ کی بات سن کر بے ہوش ہو جاتیں۔

دوسری جانب ای سی ایل کے معاملے پر سندھ ہائیکورٹ نے ماڈل کی فوری سماعت کی درخواست منظور کر لی، عدالت میں اٹارنی جنرل کی جانب سے جواب جمع کرایا گیا ، جواب میں ایان علی کا ایف آئی آر میں کوئی نام نہیں ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں