site
stats
پاکستان

جوڈیشل کمیشن کے قیام سے نہ کسی کی جیت ہوئی نہ ہار،ایاز صادق

اسلام آباد : اسپیکر قومی اسمبلی ایاز صادق نے کہا ہے کہ پانامہ پیپرز سے متعلق کیس سپریم کورٹ میں زیر سماعت ہے اور سماعت کے دوران کیس کو زیرِ بحث لانا عدالت پراثراندازہونے کے مترادف ہو تا ہے۔

تفصیلات کے مطابق قومی اسمبلی کے اسپیکر ایاز صادق نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ قومی اسمبلی میں بات میرٹ پر ہوتی ہے،میرے پاس جو بھی معاملات آتے ہیں اُن پر رولز آف پروسیجر کے تحت عمل کرتا ہوں۔

انہوں نے کہا کہ یہ قومی اسمبلی ہے جہاں فائلیں تبدیل نہیں ہوتی اور یہاں بہت سوچ سمجھ کر فیصلے ہوتے ہیں۔

پانامہ کیس کے حوالے سے پوچھے گئے سوال کے جواب میں اُن کا کہنا تھا کہ کیس سپریم کورٹ میں زیر سماعت ہے اور ہم میں سے ہر ایک شخص کو عدالت پر مکمل بھروسہ ہے اس لیے سب کو عدالت کے فیصلے کا انتظار کرنا چاہیے۔

انہوں نے بلاول بھٹو کے لیے نیک تمناؤں کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ میرا خیال ہے کہ جوڈیشل کمیشن کے قیام کے بعد اب کسی بات کی کوئی گنجائش بنتی نہیں ہے۔

ایک صحافی کے جواب میں انہوں نے کہا کہ پانامہ پیپرا کی تحقیقات کے حوالے سے سپریم کورٹ کی جانب سے جوڈیشل کمیشن کے قیام سے نہ تو کسی کی جیت ہوئی ہے اور نہ ہی ہار ہوئی ہے باقی سپریم کورٹ جو فیصلہ کرے گی وہ سب کے لیے قابل قبول ہوگا۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top