The news is by your side.

Advertisement

اسرائیلی پارلیمنٹ میں اذان، یہودی طیش میں‌ آگئے

یروشلم:اسرائیل مسجد اقصیٰ سمیت دیگر فلسطینی مساجد میں اذان پر پابندی عائد کرنے کے لیے قانون سازی کررہا ہے لیکن اسرائیلی پارلیمنٹ کے رکن ابو عرار نے پارلیمنٹ کے اجلاس میں اذان دے کر اس پابندی کو مسترد کردیا۔

تفصیلات کے مطابق اسرائیلی پارلیمنٹ میں اجلاس کے دوران جب ممبر اسمبلی ابو عرر کو تقریر کا موقع دیا گیا تو انہوں نے بات کے اوائل میں مسجد اقصیٰ کی بندش اور اذانوں پر عائد ہونے والی پابندی کی سخت الفاظ میں مذمت کی۔

تقریر کے دوران اسرائیلی ارکینِ پارلیمنٹ نے بدمزگی پیدر کرنے کی کوشش کی تو انہوں نے اذان دینا شروع کردی اوراجلاس میں شریک لوگوں کو یہ پیغام دیا کہ اذان پر کسی صورت پابندی نہیں لگائی جاسکتی۔

اسرائیلی پارلیمنٹ میں ابو عرار کی خوبصورت آواز میں آذان شروع ہوتے ہی اراکین اپنی نشستوں سے اٹھ کر احتجاج کرنے لگے اور کچھ لوگ اجلاس کے کمرے سے باہر بھی چلے گئے مگر انہوں نے اذان کو پورا کیا۔


Muslim lawmaker’s Adhan in Israel parliament by arynews

خیال رہے کہ اذان پر پابندی کے مجوزہ بل پر ہونے والی ووٹنگ اسرائیلی پارلیمنٹ نے فی الحال  ملتوی کردی ہے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں