The news is by your side.

Advertisement

بابراعظم میں مستقبل کے عظیم بلے باز کی جھلک دکھائی دیتی ہے، محمد اظہرالدین

ممبئی : بھارتی کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان محمد اظہرالدین نے کہا ہے کہ بابراعظم اگر اسی مستقل مزاجی سے آگے بڑھتے رہے تو وہ کئی کارنامے انجام دے سکتے ہیں اور ان میں مستقبل کے عظیم بلے باز کی جھلک نظر آتی ہے۔

یہ بات سابق بھارتی کپتان محمد اظہرالدین نے بھارتی میڈیا کو انٹرویو دیتے ہوئے کہی، پاکستان کے نوجوان کرکٹر بابراعظم کی تعریف کرتے ہوئے محمد اظہرالدین نے کہا کہ ہر کھلاڑی کا اپنا دور اور مزاج ہوتا ہے، میں ویرات کوہلی سمیت کسی سے بھی بابر کا موازنہ درست نہیں سمجھتا ہوں۔

انہوں نے کہا کہ کورونا کی وجہ سے پیدا ہونے والی صورتحال میں انگلینڈ نے انٹرنیشنل کرکٹ کی بحالی کیلیے بہترین انتظامات کیے، اس سے دیگر ملکوں کو بھی احتیاطی تدابیر کے حوالے سے سیکھنے کا موقع ملے گا۔

ایک انٹرویو میں57 سالہ محمد اظہرالدین نے کہا کہ بابر اعظم بہت اچھے کرکٹر ہیں، وہ ابھی نوجوان ہیں اور ان میں بہت کرکٹ باقی ہے۔ ایک سوال پر سابق کپتان نے کہا کہ بابر اعظم کا ویرات کوہلی سے موازنہ درست نہیں، ہر کوئی اپنے زمانے کا بہترین کھلاڑی اور اس کا اپنا مزاج ہوتا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ میں موازنہ کرنے کے حق میں نہیں ہوں، جو بھی اچھا ہو اس کی بیٹنگ کا لطف اٹھانا اور تعریف کرنی چاہیے۔مستقبل میں ہند پاک مقابلوں کے امکانات پر انھوں نے کہا کہ یہ حکومتوں کا معاملہ ہے، دونوں پڑوسی ملکوں میں بات چیت شروع ہو تب ہی سیریز بھی ممکن ہوسکتی ہے۔

محمد اظہرالدین نے انکشاف کیا کہ وہ پاکستانی بیٹنگ کوچ یونس خان کو اس وقت سے جانتے ہیں جب انہوں نے دو دہائی قبل ڈیبیو کیا تھا۔ 57 سالہ اظہر نے اس یونس خان کیلئے اپنے اس مشورے کا بھی تذکرہ کیا جو انہوں نے یونس خان کو 2016 میں پاکستان کے دورہ انگلینڈ کے موقع پر دیا تھا اور جس کے نتیجے میں بلے باز نے اوول میں شاندار ڈبل سنچری بنائی تھی۔

واضح رہے کہ یونس خان نے حال میں ہی اس کا تذکرہ کیا تھا اور اظہر کے ساتھ اس کے لئے اظہار تشکر کیا تھا، محمد اظہر الدین نے مزید کہا کہ میں نے اسے ٹی وی پر بیٹنگ کرتے ہوئے دیکھا تھا اور وہ غلط انداز میں کھیل رہے تھے۔

کبھی وہ کریز کے آؤٹ سائیڈ سے کھیل رہے تھے اور کبھی وہ دوسری چیزوں کی آزمائش کر رہے تھے۔ مجھے ایسا کھلاڑی دیکھنا پسند نہیں تھا، جس نے 10،000 رنز بنائے تھے اور وہ اس انداز میں بیٹنگ کر رہا تھا لہٰذا میں نے انہیں فون پر مشورہ دیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں