site
stats
بلوچستان

باب دوستی پر کشیدگی ، پاک افغان فورسز کی فلیگ مٹینگ

چمن: پاکستان اور افغانستان کی سرحد پر تنازعے کے بعد باب دوستی آج دوسرے روز بھی بند رہا جس کے باعث پاک افغان سرحد پر گاڑیوں کی لمبی قطاریں لگ گئیں۔

تفصیلات کے مطابق افغان شہریوں کی جانب سے 18 اگست کو  باب دوستی پر پتھراؤ اور پاکستانی پرچم کی توہین کے بعد پاکستانی حکام کی جانب سے بابِ دوستی بند کردیا گیا جس کے باعث پاک افغان سرحد آج دوسرے روز بھی بند رہی۔

افغان فورسز کی جانب سے پاک افغان سرحد پر پاکستان اور افغانستان فورسز میں فلیگ مٹینگ ہوئی، افغان فورسز کی جانب سے کرنل محمد علی جبکہ پاکستان کی جانب سے لیفٹینٹ کرنل محمد چینگیز نے سربراہی کی۔

پڑھیں:   پاک افغان مذاکرات، طور خم بارڈر پر کشیدگی کم کرنے پر اتفاق

فلیگ مٹینگ میں 18 اگست کو افغان شہریوں کی جانب سے باب دوستی پر پتھراؤ کرنے پر پاکستانی فورسز نے سخت اظہار ناراضی کی اور اپنے تحفظات سے آگاہ کیا، جس پر افغان فورسز نے کہا کہ ’’پاکستانی عوام نے بھی ہمارے صدی کی تصاویر نذر آتش کی گئیں ہیں‘‘۔

پاکستانی حکام نے افغان فورسز کو جواب دیتے ہوئے کہا کہ ’’آپ لوگ میڈیا دیکھا کریں اُس دن کی ریلی میں بھارتی وزیر اعظم نریندر موودی کا پتلا اور بھارتی جھنڈا نذر آتش کیا گیا ہے مگر آپ لوگوں واقعے کی تصدیق کرنے کے بجائے بھارت کو خوش کرنے کے لیے بابِ دوستی پر پتھراؤ کیا‘‘۔

مزید پڑھیں:  چمن سرحد کے قریب افغان انٹیلی جنس افسر گرفتار

افغان فورسز نے پاکستانی وفد کی بات سننے کے بعد مذرت کرتے ہوئے کہا کہ ’’ساری رنجشیں ختم کریں ، آئیں عہد کریں کہ آئندہ ہم اچھے ہمسائے کی طرح رہیں گے اور کسی ملک کی مداخلت پر پاکستان کے خلاف کسی سازش کا حصہ نہیں بنیں گے‘‘۔

افغان فورسز کی جانب سے باب دوستی کو دوبارہ کھولنے کے حوالے سے بھی بات چیت کی گئی تاہم مذاکرات کسی بھی پیش رفت کے بغیر ختم ہوگئے۔

 

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top