The news is by your side.

Advertisement

چودہ سالہ بچی کی عدم بازیابی کے خلاف والدین کا خودسوزی کرنے کا اعلان

لاہور : چودہ سالہ مغوی بچی کی عدم بازیابی پر اس کے والدین نے پنجاب اسمبلی کے سامنے خودسوزی کرنے کا اعلان کردیا، والدین کا کہنا ہے کہ دوماہ گزرنے کے باوجود پولیس ہماری مدد نہیں کررہی۔

تفصیلات کے مطابق دو ماہ قبل پنجاب کے شہر بہاولپور سے اغواء ہونے والی چودہ سالہ صدف کے والدین نے اپنی بچی کی عدم بازیابی کیخلاف پنجاب اسمبلی کے سامنے خودسوزی کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ بچی کے اغواء کو دو ماہ گزر چکے ہیں مگر پولیس سمیت کوئی حکومتی ادارہ بچی کی بازیابی کیلئے انکی مدد کو آگے نہیں آیا۔

اے آر وائی نیوز کے نمائندے خواجہ نصیر کے مطابق بہاولپور کے علاقے یزمان سے اغواء کی جانے والی چودہ سالہ صدف کے والد نے الزام عائد کیا ہے کہ دو ماہ قبل علاقے کے بااثر افراد نے انکی نابالغ بیٹی کو نہ صرف اغواء کیا بلکہ زبردستی اس کا نکاح بھی کروادیا۔

مقدمے کے انداراج کے باوجود پولیس ان کی بیٹی کو بازیاب نہیں کررہی، غم سے نڈھال صدف کی والدہ کا کہنا ہے کہ بیٹی واپس نہ ملی تو پورا خاندان پنجاب اسمبلی کے سامنے خود سوزی کرلے گا۔

یاد رہے کہ پنجاب اسمبلی کے گذشتہ اجلاس میں بھی نابالغ صدف کے اغواء کے معاملے کو ایوان میں اٹھایا گیا تھا، متعلقہ صوبائی وزیر نے مغویہ کی بازیابی کی زبانی کلامی یقین دہانی تو کروائی لیکن تاحال عملی طور پر کچھ نہ ہو سکا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں