site
stats
پاکستان

بلوچ علیحدگی پسندوں نے باغی لیڈر’اللہ نظر‘ کی ویڈیوجاری کردی

اسلام آباد: بلوچ علیحدگی پسند باغیوں نے ایک ویڈیو ریلیز کی ہے جس کے ذریعے انہوں نے دعویٰ کیا ہے کہ ان کا لیڈراللہ نظرزندہ ہے جس کے بارے میں پاکستانی حکومت کا موقف تھا کہ وہ اگست میں ہونے والے ایک حملے میں مارا جاچکا ہے۔

ویڈیو شوٹ ہونے کی تاریخ کی تاحال مصدقہ ذرائع سے تصدیق نہیں کی جاسکی ہے تاہم بی ایل ایف کے ترجمان میران بلوچ نے کہا ہے کہ یہ ویڈیوماہ نومبرمیں بلوچستان میں فلمائی گئی ہے۔

ویڈیو میں بلوچ باغی لیڈر اللہ نظر نے کہا ہے کہ ’’کچھ عرصے سے حکومت میری موت کا پروپیگنڈہ کررہی ہے جو کہ جھوٹ ہے‘‘۔

ویڈیو میں اللہ نظرنے گولیوں کی بیلٹ پہن رکھی ہے اوران کے برابرمیں ایک آٹومیٹک رائفل رکھی ہوئی تھی۔

بلوچستان کے صوبائی وزیرداخلہ سرفراز بگٹی نے کہا ہے کہ ’’ابھی انہوں نے یہ ویڈیو نہین دیکھی لہذا وہ اس پر کوئی بھی تبصرہ کرنے سے قاصرہیں‘‘۔

واضح رہے کہ ماہ ستمبر میں سرفراز بگٹی نے دعویٰ کیا تھا کہ ’’اللہ نظر ماہ اگست میں بلوچستان کے ڈسٹرکٹ آواران میں ہونےوالے ایک حملے میں مارا جاچکا ہے‘‘۔

باغی گروہ کی جانب سے آئے دن اغوا برائےتاوان اورحکومتی اور سیکیورٹی اداروں پر حملے کے واقعات پیش آتے رہتے ہیں۔

اللہ نظرکا تعلق بلوچستان کے صوبائی دارالحکومت کوئٹہ سے ہے اوروہ ایک ڈاکٹرتھے ، بلوچ علیحدگی پسند لیڈروں میں ان کی شہرت بے پناہ ہے اور وہ ابھی بھی حکومت کے خلاف برسرِ پیکارہیں جبکہ زیادہ تر علیحدگی پسند لیڈر بیرونِ ملک فرار ہوچکے ہیں جن میں براہمداخ بگٹی بھی شامل ہیں جنہوں نے ماہ اگست میں حکومت کے ساتھ مذکرات پررضامندی ظاہرکی تھی۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top