The news is by your side.

Advertisement

بلوچستان میں اغواء برائے تاوان کی وارداتوں پرسیاسی جماعتوں کا اظہارِتشویش

کوئٹہ : بلوچستان کی مختلف سیاسی جماعتوں نے صوبے میں اغواء برائے تاوان کی وارداتوں پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے مختلف علاقوں سے اغواء کئے گئے چار مغویوں کی فوری بازیابی کا مطالبہ کر دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق کوئٹہ پریس کلب میں جماعت اسلامی، جمعیت علماء اسلام (نظریاتی) ہزارہ ڈیموکریٹک پارٹی سمیت سات سیاسی و سماجی تنظیموں اور تاجر رہنماﺅں نے مشترکہ پریس کانفرنس کی۔

پریس کانفرنس میں قاری مہر اللہ، مولانا عبدالکبیر و شاکر و دیگر کا کہنا تھا کہ بلوچستان میں بدامنی دوبارہ سر اٹھارہی ہے، گزشتہ چند ماہ میں اغواء برائے تاوان کی وارداتوں کے 6 واقعات رونما ہوئے ہیں، جن پر بلوچستان کی عوام کو شدید تشیویش ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ گزشتہ ماہ اغواء ہونے والے ’’خدام بھٹی 70 لاکھ اور ڈاکٹر ارشاد کھوسہ بھاری تاوان کی رقم ادا کرنے کے بعد رہا ہوئے ہیں، جبکہ باقی چار مغوی ’’محمد رفیق کاکڑ، اسد خان ترین، عبدالنافع اچکزئی اور شیر خان اچکزئی‘‘ تاحال اغواء کاروں کے پاس موجود ہیں۔

اس موقع پر رہنماؤں نے حکومت بلوچستان سے مطالبہ کیا کہ وہ فوری طور پر اغواء برائے تاوان میں ملوث افراد کے سخت خلاف کارروائی کرتے ہوئے مغویوں کو فوری طور پر بازیاب کروائے۔

انہوں نے کہا کہ اگر حکومت نے مغویوں کو بازیاب نہیں کروایا تو بلوچستان کی تمام سیاسی جماعتوں سے رابطہ کر کے سخت احتجاج کریں گے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں