The news is by your side.

Advertisement

بلوچستان سے افغان انٹیلی جنس کے 6 اہلکار گرفتار

کوئٹہ: وزیرداخلہ بلوچستان سرفراز بگٹی نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے بتایا ہے کہ حساس اداروں نے بلوچستان کے مختلف علاقوں سے افغان انٹیلی جنس کے 6 اہلکار گرفتار کیے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق صوبائی وزیرداخلہ نے بتایا کہ گرفتار ہونے والے اہلکار بھارتی خفیہ ایجنسی را اور این ڈی ایس سے رابطے میں تھے اور ملک میں بدامنی پھیلا رہے تھے۔

گرفتار دہشت گرد محبوب، عصمت اللہ کا تعلق افغانستان کے صوبے ہلمند ، عبداللہ شاہ ،نور احمد اور احمد اللہ کا تعلق قندھار جبکہ محمد شفیع کا تعلق پشین سے ہے۔

انہوں نے مزید بتایا کہ گرفتار دہشت گرد ایف سی اور دیگر حملوں میں ملوث رہے ہیں اور انہوں نے دوران تفتیش 40 افراد کے قتل کا اعتراف کیا ہے۔

گرفتار اہلکار مہاجر کیمپ میں مقیم تھے جبکہ ایک اہلکار کے اہلخانہ بلوچستان کے علاقے کچلاک میں رہائش پذیر ہے، تمام افراد کے پاس قومی شناختی کارڈ موجود ہیں۔

دہشت گردوں نے انکشاف کیا ہے کہ انہیں نادرا میں موجود کالی بھیڑوں نے بیس ہزار روپے کے عوض قومی شناختی کارڈ جاری کیے ہیں۔

اس موقع پر سرفراز بگٹی نے اعلان کیا کہ افغانستان کے لوگ پاکستان کی بدنامی کا سبب بن رہے ہیں اور پاکستان میں امن و امان خراب کررہے ہیں،  اب افغان مہاجرین کو ہرصورت اپنے وطن افغانستان جانا ہوگا۔

اگرعالمی برادری نے افغان مہاجرین کی واپسی کے لیے اقدامات نہ کیے تو پاکستانی حکام اور عوام انہیں دھکے دے کر ملک سے نکال دیں گے۔

اس موقع پر گرفتار دہشت گردوں نے اقبالی بیانات کی ویڈیو چلائی گئی، جس میں تمام افراد نے انکشاف کیا ہے کہ ان کو افغان اور بھارت کی خفیہ ایجنسیوں نے پاکستان میں امن و امان خراب کرنے کے لیے بھیجا تھا اور اس کے لیے انہوں نے کوئٹہ میں کارروائیاں کی ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں