The news is by your side.

Advertisement

بانس میں پکنے والی انوکھی بریانی

دیسی کھانوں میں سرفہرست ’بریانی‘ کی کئی اقسام ہیں تاہم آج ہم آپ کو بانس میں پکنے والی بیمبو بریانی کے بارے میں بتائیں گے۔

بیمبو بریانی بھارت کی جنوبی ریاست آندھرا پردیش کے شمالی علاقے کی مقامی ڈش ہے جو اپنے منفرد انداز کی وجہ سے تیزی سے مشہور ہوئی۔

یہ بریانی ویسے ہی تیار کی جاتی ہے مگر فرق صرف برتن کا ہوتا ہے، چند سالوں قبل گاؤں دیہاتوں میں رہنے والے لوگ برتن میسر نہ ہونے کی وجہ سے بانس کا استعمال کرتے تھے مگر اب یہ ڈش مشہور ہوتی جارہی ہے۔

عام طور پر بریانی بنانے کے لیے پتیلے کی ضرورت ہوتی ہے جس میں چاول ڈال کر پکائے جاتے ہیں البتہ بیمبو بریانی کو ایک خاص قسم کے بانس کی لکڑی میں تیار کیا جاتا ہے۔

بانس کی لکڑی کو اندر سے کھوکھلا کر کے اسے تقریباً دیڑھ سے دو فٹ کے ٹکڑوں میں کاٹ کر دوسری طرف ایک کپڑا ٹھونس دیا جاتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: گرما گرم مچھلی بریانی

پکاتے وقت اس میں سب سے پہلے چاول پھر پانی ڈالا جاتا ہے اور پھر جیسے ہی پانی خشک ہو اور چاول گل جائیں تو اس میں مزید مصالحے اور گوشت شامل کیا جاتا ہے۔

بانس کی ایک خاصیت یہ ہے کہ یہ آگ نہیں پکڑتا اس لیے چاول اور دیگر مصالحہ جات شامل کر کے بریانی بنائی جاتی ہے۔

آندھرا پردیش کے علاقے ویجایاوادا میں سریش نامی شہری نے پہلا ہوٹل اگست 2018 میں کھولا جو دیکھتے ہی دیکھتے مقبول ہوگیا اور لوگ انوکھے طریقے سے تیار ہونے والی بریانی کھانے آنے لگے۔

یہ بھی پڑھیں:  ہرے مصالحے کی مزیدار بریانی

مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ چونکہ بھارت کے شمالی علاقوں میں برتن میسر نہیں تھے تو وہاں کے مقامی بانس کی لکڑی میں کھانا تیار کرکے اسے بڑے بڑے پتوں پر ڈال کر پیش کرتے تھے۔

بریانی بنانے کا مکمل طریقہ

ویجایاودا میں کھولا جانے والے ہوٹل میں آنے والوں کو بھی اُسی طرح پتے پر بریانی رکھ کر پیش کی جاتی ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں