بھارتی فلموں کی نمائش پر پابندی کے حوالے سے لاہورہائی کورٹ میں درخواست دائر -
The news is by your side.

Advertisement

بھارتی فلموں کی نمائش پر پابندی کے حوالے سے لاہورہائی کورٹ میں درخواست دائر

لاہور : ہائی کورٹ میں اسٹیج اداکار افتخار ٹھاکر کی جانب سے پاکستان میں بھارتی فلموں کی نمائش کے خلاف درخواست قابلِ سماعت ہونے کے حوالے سے دلائل طلب کرلیے گیے۔

تفصیلات کے مطابق لاہور ہائی کورٹ میں اسٹیج اداکار افتخار ٹھاکر کی جانب سے دائر درخواست پر سماعت کرتے ہوئے جج شاہد کریم نے ملک بھر میں بھارتی فلموں کی نمائش پر پابندی کے حوالے ہوئے درخواست قابلِ سماعت ہونے کے بارے میں دلائل طلب کرلیے، اسٹیج اداکار کی جانب سے عدالت میں دائر کی گئی درخواست میں کہا گیا ہے کہ ’’بھارت کشمیریوں پر مظالم ڈھا رہا ہے اور پاکستان میں بھارتی فلم انڈسٹری کو فروغ دیا جارہاہے، جو کشمیریوں کے زخموں پر نمک چھڑکنے کے مترادف ہے‘‘۔

درخواست گزار نے عدالت سے استدعا کی ہے کہ ’’کشمیر میں بھارتی مظالم بند ہونے تک ملک کے تمام سینما گھروں میں بھارتی فلموں کی نمائش پر مکمل پابندی عائد کی جائے‘‘۔ عدالت نے بھارتی فلموں کی نمائش کا نوٹیفیکشن درخواست کے لف کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے درخواست قابل سماعت ہونے کے بارے میں دلائل طلب کر لیے۔

پڑھیں : مقبوضہ کشمیر: 17ویں دن بھی کرفیو نافذ، شہادتوں کی تعداد 56ہوگئی

یاد رہے مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی جانب سے نہتے کشمیریوں پر 18 روز سے مسلسل مظالم کا سلسلہ جاری ہے، کشمیری حریت پسند نوجوان برہان وانی کی دورانِ حراست شہادت کے بعد کشمیریوں کی جانب سے تحریک آزادی کے لیے کشمیر کے مختلف علاقوں میں احتجاجی مظاہرے کیے گیے۔

بھارتی افواج کی جانب سے مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے فائرنگ کی گئی جس کے نتیجے میں اب تک 50 سے زائد کشمیری جاں بحق ہوچکے ہیں، کشمیریوں کی مسلسل ہلاکت کے بعد مقبوضہ کشمیر کے مختلف علاقوں میں احتجاجی مظاہروں کاسلسلہ جاری ہے جبکہ ان مظاہروں کو روکنے کے لیے بھارتی افواج کی جانب سے وادی میں 18 روز سے کرفیو نافذ کیا ہوا ہے، جس کے باعث اشیاء خوردونوش غذائی قلت کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔

یہ بھی پڑھیں : حریت رہنما سید علی گیلانی گرفتار

دوسری جانب گزشتہ روز حریت رہنماء کو حراست میں لیے جانے کے بعد کشمیر میں ہونے والے مظاہروں میں ایک بار پھر تیزی آگئی ہے، بھارتی افواج کی جانب سے کشمیر میں انٹرنیٹ اور ٹیلی فون کی سروس بھی معطل کی ہوئی ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں