site
stats
برطانیہ

برطانیہ، 16 سے کم عمر بچوں کو انرجی ڈرنکس کی فروخت پر پابندی

برطانیہ : معروف سپر اسٹور نے کیفین اور شوگر کی حد سے زیادہ مقدار رکھنے والی انرجی ڈرنکس  16 سے کم عمر بچوں کو فروخت کرنے پر پابندی عائد کر دی ہے۔

بین الااقوامی خبر رساں ایجنسی کے مطابق برطانیہ کے معروف سپر مارکیٹ گروپ ویٹروسیسس (Waitroseas)  نے کیفین کی زیادہ مقدار رکھنے والی انرجی ڈرنکس کی 16 سال سے کم عمر بچوں کو فروخت کرنے پر مکمل پابندی لگا دی ہے۔

اس فیصلے کے بعد 150 ملی گرام فی لٹر تک کیفین کی مقدار رکھنے والی سوفٹ ڈرنکس کو خریدنے سے پہلے خریدار کو اپنی عمر سولہ سال کم ثابت کرنی ہوگی بہ صورت دیگر انرجی ڈرنکس فروخت نہیں کی جائے گی۔

سپر مارکیٹ گروپ کی جانب سے یہ فیصلہ اس مہم  کے بعد کیا گیا جب کچھ شکایت کنندہ کی جانب سے انرجی ڈرنکس کی فروخت پر مکمل پابندی کا مطالبہ پورے برطانیہ میں زور پکڑتا جا رہا ہے۔

انرجی ڈرنکس کی فروخت پر مکمل پابندی کی مہم چلانے والی سماجی تنظیموں اور افراد کا کہنا ہے کہ کیفین اور شوگر کی مقدار زیادہ ہونے کے سبب انرجی ڈرنکس پینے کے بعد بچوں کی کلاس روم میں صلاحیتوں پر برا اثر پڑ رہا ہے اوریہ بچوں کی مجموعی صحت کے لیے بھی مضر ہے۔

یاد رہے اس سے قبل 2013 میں ایک اور معروف سپر مارکیٹ گروپ مورری سنز (Morrisons) نے بھی اپنے چند اسٹورز پر 16 سال سے کم عمر بچوں پر انرجی ڈرنکس کی خریداری پر پابندی عائد کی تھی۔

برطانیہ کے نوجوان انرجی ڈرنکس کے دلدادہ ہیں اور یہی وجہ ہے کہ برطانوی نوجوان انرجی ڈرنکس کے استعمال کے لیے پوری دنیا میں شہرت رکھتے ہیں اور اس وقت پو رے یورپ میں انرجی ڈرنکس کا سب سے زیادہ استعمال بھی برطانیہ میں ہی کیا جاتا ہے۔

اساتذہ اور سماجی تنظیموں کے نمائندوں نے انرجی ڈرنکس کی بچوں کو فروخت کرنے پر پابندی عائد کرنے کو خوش آئند قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اس اقدام سے بچوں میں نہ صرف یہ کہ خود اعتمادی میں اضافہ ہوگا بلکہ وہ غلط برتاؤ کی عادت سے بھی جان چھڑا پائیں گے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top