The news is by your side.

اومنی شوگراسکینڈل: صائمہ مجید کے وارنٹ گرفتاری جاری

انور مجید کے پیش نہ ہونے پر عدالت کا اظہارِ برہمی

کراچی: اومنی گروپ کی جانب سےاربوں روپےکی چینی غائب کرنےکے کیس کی سماعت کرتے ہوئے عدالت نےصائمہ مجیدکےقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کردیے۔

تفصیلات کے مطابق آج کراچی کے بینکنگ کورٹ میں اربوں روپے کی چینی غائب کرنے کے کیس کی سماعت ہوئی۔اومنی گروپ کےسربراہ انورمجیدکودوسری باربھی پیش نہ کرنےپرعدالت نے اظہارِ برہمی کیا۔ عدالت نے اس موقع پر مقدمے میں نامزد ملزمہ صائمہ مجید کے قابلِ ضمانت وارنٹ گرفتاری بھی جاری کیے۔

عدالت نے انور مجید کے وکلا اور جیل حکام سے استفار کیا کہ انور مجید کہاں ہیں؟۔ جس پر جیل حکام نے جواب دیا کہ انہیں لینے اسپتال گئے تھے مگر وہاں سے میڈیکل سرٹیفکیٹ دے دیا گیا۔ عدالت نے سوال کیا کہ ہم نےانورمجیدکامیڈیکل سرٹیفکیٹ بنانےوالےڈاکٹرکوبلایاتھاوہ کہاں ہیں۔یہ روایتی میڈیکل سرٹیفکیٹ ہے،پہلےوالےمیں اضافہ کرکےبھیج دیاگیا ہے۔

عدالت کے سوال کرنے پر انور مجید کے وکیل نے بتایا کہ انورمجیدکودل کےعارضےسمیت دیگربیماریاں لاحق ہیں، انورمجیدکادل صرف23فیصدکام کررہاہے۔ وکیل کے جواب پر عدالت کا کہنا تھا کہ ایسی کوئی بیماری نہیں کہ انورمجیدچل پھرنہ سکتےہوں۔

عدالت نے اپنے ریمارکس میں کہا کہ ملزم کوبٹھانےکاعدالت کوکوئی شوق نہیں،اس نوعیت کی بیماریاں ہرچوتھےشہری کوہیں۔ آپ کہتےہیں انورمجیدکودل کاعارضہ ہے، اب تودل کاآپریشن کرکےایک ہفتےمیں ڈسچارج کردیتےہیں۔یہ بتائیں انورمجیدکوایک ماہ سےکیوں رکھا ہواہے۔ عدالت نے یہ بھی کہا کہ کیس میں کسی بھی صورت التوا نہیں چاہتے۔

جواب میں ملزم کے وکیل نے کہا کہ ذاتی معالج نےطبعیت کی خرابی کےباعث اسٹنٹ نہیں ڈالا، انورمجیدکوطبیعت خرابی کےباوجودجیل لےجانےسےمزیدخراب ہوئی۔ وکیل کے جواب پر عدالت کا موقف تھا کہ ڈاکٹرکووضاحت کےلیےبلایا تھابیماری کےبارےمیں آگاہ کریں۔ ساتھ ہی ساتھ عدالت نے ان کے وکیل کو حکم دیا کہ آپ انورمجیدکا دستخط شدہ وکالت نامہ جمع کرائیں۔ ہمیں انورمجیدکےوکالت نامےاورکیس آگےچلنےسےغرض ہے۔

عدالت نےملزمان کے وکلا کومقدمات کی نقول فراہم کرتے ہوئے آئندہ سماعت 6دسمبرتک ملتوی کردی۔ عدالت نے عندیہ دیا کہ آئندہ سماعت پرملزمان پرفردجرم عائدکی جائےگی۔

یاد رہے کہ قومی ادارہ امراض قلب کے سی سی یو میں زیرعلاج اومنی گروپ کے مالک انورمجید کو ڈاکٹروں نے ایک ماہ قبل فوری طور پر اوپن ہارٹ سرجری کی تجویز دی تھی۔

اس حوالے سے ترجمان این آئی سی وی ڈی کا کہنا تھا کہ انور مجید کے دل کا ایک “والو” بھی تبدیل کرنا ہوگا، انور مجید کے اہل خانہ کو صورت حال سے آگاہ کردیا گیا تھا کہ اگران کے اہل خانہ انورمجید کا علاج کہیں اور کرانا چاہیں تو کراسکتے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں