The news is by your side.

Advertisement

سندھ کے شہری علاقوں میں پانی کی مزید قلت کا خدشہ

سکھر : سندھ کے بیراجوں پر پانی کی قلت میں کمی نہ آسکی، مختلف شہروں میں نہری نظام متاثر ہونے سے زراعت کے ساتھ پینے کے پانی کا بحران بھی شدید ہوگیا ہے۔

سجاول میں پانی کے بحران کیخلاف کاشت کاروں نے احتجاج کرتے ہوئے حیدرآباد سجاول روڈ رکاوٹیں لگا کر بلاک کردی۔ اس حوالے سے ذرائع کا کہنا ہے کہ سندھ کے تینوں بیراجوں پر پانی کی قلت61 فیصد سے زیادہ ریکارڈ کی گئی ہے۔

انچارج کنٹرول روم کے مطابق تربیلا ڈیم اور تونسہ پرڈیڈ لیول ختم نہ ہوسکا، تربیلا پر پانی کی آمد 89 ہزار 400اخراج 88 ہزار600 کیوسک ریکارڈ کیا گیا ہے۔

اعداد و شمار میں بتایا گیا ہے کہ کالا باغ پر پانی کی آمد 79 ہزار387 اور اخراج 76 ہزار387 کیوسک ریکارڈ کیا گیا ہے۔
اس کے علاوہ تونسہ پر پانی کی آمد81 ہزار814 اور اخراج 74 ہزار422 کیوسک جبکہ گڈو بیراج پر پانی کی آمد 55ہزار628،اخراج 46 ہزار266 کیوسک ریکارڈ کی گئی ہے۔

مزید پڑھیں : سندھ میں پانی کی قلت خطرناک حد تک پہنچ گئی

انچارج کنٹرول روم کا مزید کہنا ہے کہ سکھر بیراج پر پانی کی آمد 48 ہزار 895 اوراخراج 18 ہزار200 کیوسک اور کوٹری بیراج پر پانی کی آمد 9 ہزار 915،اخراج120 کیوسک ریکارڈ کی گئی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں