The news is by your side.

Advertisement

عدالت نے ریچھ کو سزائے موت دے دی

روم: اطالوی عدالت نے باپ بیٹے کو زخمی کرنے والے ریچھ کو سزائے موت سنادی۔

امریکی نشریاتی ادارے کی رپورٹ کے مطابق اٹلی کے علاقے ٹرینٹینو میں ایک ریچھ نے باپ بیٹے پر حملہ کر کے انہیں زخمی کیا جس کے بعد متاثرہ افراد نے ریچھ کے خلاف مقدمہ درج کرایا۔

عدالت نے حملہ کرنے پر ریچھ کو سزائے موت دینے کا فیصلہ سنایا جس پر جانوروں کے حقوق پر کام کرنے والی عالمی تنظیموں نے سزا کو غیر قانونی قرار دیتے ہوئے اسے واپس لینے کا مطالبہ کیا۔

امریکی نشریاتی ادارے کی رپورٹ کے مطابق بھورے بھالو نے   ٹرینٹینو کے شمالی علاقے میں  پہاڑوں پر سیاحت کرنے کے دوران باپ بیٹے پرگزشتہ ہفتے حملہ کیا تھا۔

حملے میں زخمی ہونے والے 59 سالہ شخص کی شناخت فیبو میسیرونی اور 28 سالہ نوجوان کرسٹن میسیرونی کے نام سے ہوئی۔

متاثرہ باپ بیٹے کا کہنا تھا کہ ’جب ہم پہاڑ پر آرام کرنے کے لیے بیٹھے تو پیچھے سے ریچھ نے حملہ کیا، اگر ہم ہوشیار نہ ہوتے تو شاید وہ ہمیں مار ڈالتا‘۔

بیٹے کا کہنا تھا کہ ’ریچھ نے والد پر حملہ کیا ، اسی دوران جب میں نے اُسے ڈنڈے سے مارا تو وہ بھاگ گیا‘۔

اٹلی کے محکمہ ماحولیاتِ تحفظ اور تحقیق کی جانب سے جاری ہونے اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ ’پہاڑوں میں گھومنے والوں کوریچھ اپنا آسان ہدف سمجھتا ہے اس لیے ہم لوگوں کو وہاں جانے کی اجازت نہیں دیتے‘۔

حملے کے بعد ٹرینٹینو کے گورنر نے واقعے کا نوٹس لیا اور محکمہ جنگلات کی فوسرز کو حکم دیا کہ وہ فوری طور پر بھالو کو مارنے کا انتظام کریں۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں