The news is by your side.

Advertisement

’محبوب ﷺ کی محفل کو محبوب سجاتے ہیں‘ :‌ وہ پانچ نعتیں جو ہمیشہ سنی جاتی ہیں

توصیف رسول ﷺ بیان کرنا ہر مسلمانوں کے ایمان کا اہم جزو ہے، اس توصیف کو اشعار کی صورت میں بیان کرنے کا آغاز  رسول اکرم ﷺ کے دور میں ہوا اور جناب حضرت حسان بن ثابت رضی اللہ تعالٰی عنہ نے فصیح و بلیغ عربی میں مداحِ رسول پیش کی، جس کے بعد یہ سلسلہ دنیا بھر میں  اپنے اپنے انداز اور  مختلف زبانوں میں جاری و ساری ہے۔

حضورِ اقدس ﷺ کی تعریف ویسے تو دنیا کی ہرزبان میں مختلف رنگ و نسل سے تعلق رکھنے والے لوگوں نے بذریعہ نعت خوانی کی تاکہ آپ ﷺ کی خوشنودی کو حاصل کیا جا سکے۔

اردو زبان میں چونکہ عربی اور فارسی زبانوں کا گہرا اثر رہا ہے ‘ اردو زبان سے تعلق رکھنے والے شعراء کرام نے اسلام کی خدمت کرنے کے لیے عربی اور فارسی زبانوں میں لکھی گئی نعتوں کا نہ صرف اردو ترجمہ کیا بلکہ اس میں نئی جہد کا اضافہ کرتے ہوئے خود بھی نعتیہ اشعار پر مبنی مجموعہ تحریر کیا۔

تقسیم برصغیر کے بعد دونوں ممالک کے مختلف شعراء نے حضور اقدس ﷺ کی شان میں نعتیہ اشعار تحریر کیے، جن میں سے کچھ اشعار کو باقاعدہ ایک طرز کی صورت میں پڑھا گیا۔

مزید پڑھیں: عید میلاد النّبی ﷺ ، ہر سو درود و سلام کی صدائیں

حویلیاں کے قریب طیارہ حادثے میں جاں بحق ہونے والے جنید جمشید نے موسیقی کی دنیا کو خیرباد کہتے ہی آپ ﷺ کی بارگاہ میں نعتیہ کلام ’’محمد کا روضہ قریب آرہا ہے، بلندی پر اپنا نصیب آرہا ہے‘‘ پڑھا جو آج ہر زد عام کی زبان پر ہے۔

معروف نعت خواں الحاج خورشید احمد (مرحوم) نے ویسے تو کئی نعتیں پڑھیں تاہم اُن کی کچھ نعتیں عوام میں بے حد مقبول ہوئیں، جن میں ’’جشنِ آمد رسول،  یہ سب تمھارا کرم ہے آقا‘‘ ودیگربے حد مقبول ہوئیں۔

معروف نعت خواں فصیح الدین سہروردی نے اپنے والد مرحوم ریاض الدین سہروردی کی تحریر کی گئی نعتیں پیش کیں، جن میں ’’سوئے طیبہ جانے والے، یہ مدینہ ہے یہاں آہستہ چل‘‘ اور دیگرنعتوں نے عوام میں کافی مقبولیت حاصل کی۔

معروف نعت خواں قاری وحید ظفر قاسمی اپنے مخصوص انداز سے کافی مقبول ہوئے، آپ نے حضور اقدس ﷺ کی شان میں کئی نعتیں پیش کیں جن میں ’زہِ مقدر حضور حق سے، وہ نبیوں میں رحمت لقب پانے والا‘‘ وغیراپنی خوبصورت آواز میں‌ پیش کیں۔

معروف نعت خواں صدیق اسماعیل  نے ’’مدینے کا سفر ہے اور میں نم دیدہ نم دیدہ ، محبوب کی محفل کو محبوب سجاتے ہیں‘‘ اور دیگر نعتیہ کلام پیش کیے۔

علاوہ ازیں وطن عزیز کے بہت سے نعت خواہوں نے توصیف نبوی میں‌اپنے کلام پیش کیے جن کے جذبات اور کلام قابل فخر ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں