The news is by your side.

Advertisement

چھ ماہ کے دوران چھالیہ اسمگلنگ میں کتنے فیصد اضافہ ہوا؟ حیران کن اعدادوشمار جاری

اسلام آباد: گذشتہ چھ ماہ میں اسمگلنگ کی جانے والی کتنی اشیا ضبط کیں؟ ان کی مالیت کتنی تھی؟ فیڈرل بورڈ آف ریونیو نے حیران کن اعداوشمار جاری کردئیے۔

ایف بی آر کی جانب سے جاری بیان کے مطابق جولائی تا جنوری کے دوران 35 ارب مالیت کی اسمگلنگ اشیا ضبط کیں گئیں، پچھلے سال اسی عرصے میں 22 ارب مالیت کی اسمگل شدہ اشیا ضبط کی گئی تھیں۔

ترجمان ایف بی آر کے مطابق پچھلے پورے مالی سال میں چھتیس ارب کی اسمگل شدہ اشیا ضبط کی گئی تھیں، رواں مالی سال کے پہلے سات سات ماہ میں ضبط شدہ اشیا پچھلےمالی سال کے برابر رہی۔

ایف بی آر کے مطابق گذشتہ چھ ماہ کے دوران 11.3 ارب روپے مالیت کی بغیر کسٹمز ادائیگی کی گاڑیاں ضبط ہوئیں، 3.4 ارب روپے کی چھالیہ ضبط کیں گئیں جوکہ گذشتہ سال کے مقابلے میں 105 فیصد زیادہ ہے۔

ایف بی آر کے مطابق 28 فیصد اضافہ کے ساتھ 1.9 ارب روپے کا کپڑا ضبط کیاگیا، 70 فیصد اضافہ کے ساتھ 553 ملین روپے کے سگریٹس، 113 فیصد اضافہ کے ساتھ 492 ملین روپے کے آٹو پارٹس، 67 فیصد اضافہ کے ساتھ 380 ملین روپے کی الیکٹرانک اشیا اور 93 فیصد اضافہ کے ساتھ 899 ملین روپے کا ڈیزل ضبط کیاگیا۔

فیڈرل بورڈ آف ریونیو کی جانب سے جاری بیان کے مطابق 104 فیصد اضافہ کے ساتھ 271 ملین روپے کے زیورات و جواہرات اور پاکستان کسٹمز نے 6 ملین ٹن کی آیوڈین بھی ضبط کی، غیر قانونی ضبط شدہ آیوڈین منشیات بنانے میں استعمال کی جاتی ہے، آیوڈین برآمدگی کی تعریف بین الاقوامی ایجنسیز نے بھی کی،اس کے علاوہ ملک بھر میں دوہزار غیر قانونی پیٹرول پمپس کوسیل کیاگیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں