The news is by your side.

Advertisement

جے یوآئی کا دھرنا، پی پی کور کمیٹی کا اجلاس آج دوبارہ ہوگا

اسلام آباد : چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری کی زیر صدارت پی پی کورکمیٹی کا اجلاس آج دوبارہ ہوگا ، جس میں جے یوآئی مارچ اور دھرنے میں شرکت کا حتمی فیصلہ ہوگا،بلاول بھٹو فی الحال دھرنے میں شریک نہیں ہوں گے۔

تفصیلات کے مطابق جے یوآئی کے دھرنے پر پیپلزپارٹی قیادت کی دوسری بڑی بیٹھک آج ہوگی،، بلاول ہاؤس میں پی پی کورکمیٹی اجلاس دوبارہ ہوگا،جس میں پارٹی کی چاروں صوبوں کی قیادت شریک ہوگی، بلاول بھٹوزرداری اجلاس کی صدارت کریں گے۔

ذرائع کے مطابق جے یوآئی مارچ اور دھرنے میں پیپلزپارٹی جزوی طور پر شریک ہوگی، حتمی فیصلہ آج بلاول ہاؤس میں ہوگا، جے یوآئی چاہتی ہے وہ دھرنےکی قیادت کرے، باقی پیچھے ہوں،بلاول بھٹو فی الحال دھرنے میں شریک نہیں ہوں گے۔

پیپلزپارٹی کا مؤقف ہے کہ دھرنے کے بجائے ترقی پسند جماعتوں کا اتحاد بنایا جائے،پیپلزپارٹی کسی بھی گٹھ جوڑ کی سیاست کو آکسیجن فراہم نہیں کرنا چاہتی، بظاہر ماضی کےاتحادی پھرنئےروپ میں سامنےلائےجاسکتےہیں۔

پیپلز پارٹی خیبرپختونخواکے کچھ رہنما دھرنےمیں بھرپورشرکت کی حامی ہیں تاہم پیپلزپارٹی پنجاب الگ سے حکومت مخالف احتجاج کی حامی ہے جبکہ سندھ اوربلوچستان جے یوآئی دھرنے کی مکمل حامی نہیں۔

گذشتہ روز پیپلز پارٹی کی کور کمیٹی کے اجلاس کے بعد میڈیا بریفنگ میں پی پی چیئرمین بلاول نے کہا تھا کہ وہ دھرنے کی سیاست کے قائل نہیں ہیں، پیپلز پارٹی دھرنا سیاست کی مخالف ہے، ایسا نہیں ہونا چاہیے کہ چند لوگ اسلام آباد میں بیٹھ کر حکومت کو گھر بھیج دیں۔

بلاول بھٹو کا کہنا تھا آئین سب کو احتجاج کی اجازت دیتا ہے، جمہوری حق ہے، پیپلز پارٹی شروع سے دھرنے کی سیاست کی مخالف رہی ہے، فضل الرحمان کے آزادی مارچ کی حمایت کی ہے، استقبال کریں گے۔

انھوں نے کہا تھا کہ سندھ حکومت فضل الرحمان کی جماعت سے رابطہ کرے گی، سندھ میں آزادی مارچ والوں کو مکمل سہولت فراہم کی جائے گی۔

پی پی چیئرمین کا کہنا تھا کہ کور کمیٹی اجلاس میں ملک کی صورت حال پر غور کیا گیا، عوام کے مسائل حل کرنے کے لیے تمام جماعتوں کو ساتھ چلنا ہوگا، مسائل حل کرنے کے لیے جمہوریت کی بحالی ناگزیر ہے، اس وقت ملک میں کئی پارٹیاں اور طبقات احتجاج پر ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں