The news is by your side.

Advertisement

وفاقی حکومت عوامی ردعمل سے پہلے اسپتالوں پر اپنا فیصلہ واپس لے، بلاول بھٹو

کراچی: سندھ کے 3 اسپتالوں کا کنٹرول وفاقی حکومت کے پاس رکھنے پر بلاول بھٹو نے تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ وفاقی حکومت عوامی ردعمل سے پہلے اسپتالوں پر اپنا فیصلہ واپس لے۔

تفصیلات کے مطابق سندھ کے تین اسپتالوں کا کنٹرول وفاقی حکومت کے پاس رکھنے پر چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو نے ردعمل دیتے ہوئے کہا ہے کہ وفاقی حکومت کا اقدام صوبائی خود مختاری پر حملے کے مترادف ہے۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ ہم ہر فورم پر حکومت کے اس اقدام کی مزاحمت کریں گے، حکومت نے نظرثانی اپیل پر فیصلہ آنے تک کا انتظار کرنا بھی گوارا نہیں کیا۔

چیئرمین پیپلزپارٹی نے کہا کہ تینوں اسپتالوں پر سندھ کے عوام کے اربوں روپے لگے ہیں، ان اسپتالوں میں حکومت سندھ نے انقلابی اقدامات کیے ہیں، دیگر شہروں میں این آئی سی وی ڈی کا قیام حکومت سندھ کا اقدام ہے۔

انہوں نے کہا کہ مریضوں کے علاج کے اخراجات سندھ حکومت نے اٹھا رکھے تھے، پی پی، سندھ کے عوام کے ٹیکس، محنت سے بنائے گئے اثاثے غصب نہیں کرنے دیں گے۔

مزید پڑھیں: وفاق نے سندھ کے 3 بڑے اسپتالوں کا انتظامی کنٹرول واپس لے لیا

بلاول بھٹو نے کہا کہ چیئرمین نیب نے وفاقی وزرا کے خلاف تحقیقات روکنے کا اعترافی بیان دیا، وفاقی حکومت کے حالیہ اقدام نے ملک میں آئینی بحران ظاہر کردیا ہے۔

واضح رہے کہ وفاق نے سندھ کے تین بڑے اسپتالوں کا انتظامی کنٹرول واپس لے لیا ہے، وزارت قومی صحت نے اس سلسلے میں نوٹیفکیشن بھی جاری کردیا ہے۔

نوٹیفکیشن جاری ہونے کے بعد جناح پوسٹ گریجویٹ میڈیکل سینٹر کا انتظامی کنٹرول وفاق کو منتقل ہو گیا۔

امراض قلب کے قومی ادارے این آئی سی وی ڈی کا انتظامی کنٹرول بھی وفاقی حکومت نے واپس لے لیا، نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف چائلڈ ہیلتھ (این آئی سی ایچ) کا کنٹرول بھی وفاقی حکومت کو منتقل ہو گیا۔

وزارت قومی صحت کی جانب سے جاری نوٹیفکیشن کے مطابق تینوں اسپتالوں کے انتظامی و مالی معاملات، ملازمین اور اثاثے وفاقی حکومت کو منتقل ہو گئے ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں