پارلیمانی حق پارلیمان میں اور آئینی حق پارلیمان سے باہر استعمال کریں گے: بلاول بھٹو -
The news is by your side.

Advertisement

پارلیمانی حق پارلیمان میں اور آئینی حق پارلیمان سے باہر استعمال کریں گے: بلاول بھٹو

کندھ کوٹ: پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کا کہنا ہے کہ پیپلز پارٹی اپنا آئینی حق استعمال کرے گی، پارلیمانی حق پارلیمان میں اور آئینی حق پارلیمان سے باہر استعمال کریں گے۔ اٹھارویں ترمیم کے خلاف سازشیں کامیاب نہیں ہونے دیں گے۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے صوبہ سندھ کے شہر کندھ کوٹ میں جلسے سے خطاب کیا۔ اپنے خطاب میں ان کا کہنا تھا کہ میر ہزار خان بجرانی کا کردار سب کے سامنے ہے، میر ہزار خان بجرانی نے ذوالفقار بھٹو اور محترمہ بے نظیر کے ساتھ کام کیا۔

بلاول کا کہنا تھا کہ شہید ذوالفقار بھٹو کا دیا گیا آئین ملک کا پہلا آئین تھا، پیپلز پارٹی نے بھٹو کے آئین کو 2008 میں بحال کیا۔ شہید بھٹو نے نعرہ لگایا تھا روٹی، کپڑا اور مکان۔

بلاول کا کہنا تھا کہ اپوزیشن کے ساتھ مل کر طے کیا معاشی، انسانی اور جمہوری حقوق پر سمجھوتہ نہیں ہوگا، 18 ویں ترمیم جو سندھ اور ملک کو تحفظ دیتی ہے خطرے میں ہے، پیپلز پارٹی 18 ویں ترمیم پر آنچ نہیں آنے دے گی۔

انہوں نے کہا کہ میڈیا کے خلاف سوچی سمجھی سازش کی جا رہی ہے، حکومت نے وعدہ کیا تھا لوگوں کو نوکریاں دیں گے، حکومت نے عوام کو صرف بے روزگار کیا ہے۔ سندھ حکومت نے عالمی معیار کے صحت کے ادارے بنائے ہیں۔

بلاول نے مزید کہا کہ پیپلز پارٹی اپنا آئینی حق استعمال کرے گی، پارلیمانی حق پارلیمان میں اور آئینی حق پارلیمان سے باہر استعمال کریں گے۔ اٹھارویں ترمیم کے خلاف سازشیں کامیاب نہیں ہونے دیں گے۔

انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی کے اقدامات سے سندھ میں تبدیلی آئی ہے، 90 ارب روپے وفاق نے سندھ حکومت کو دینے ہیں۔ سندھ حکومت کے پیسے جان بوجھ کر روکے جا رہے ہیں۔ سندھ میں پیپلز پارٹی عوام کی خدمت پر توجہ مرکوز کیے ہوئے ہے۔ ’ہم نے بڑے وقت دیکھے ہیں ایسی سازشوں سے کچھ نہیں ہوگا‘۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں