The news is by your side.

Advertisement

سیاسی مخالفین کو پکڑنے کیلئے نیب کو استعمال کیا جاتا ہے، بلاول بھٹو زرداری

کراچی : چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ سیاسی مخالفین کو پکڑنے کیلئے نیب کو استعمال کیا جاتا ہے، کوئی بتائے گا کہ ہمارے شہیدوں کےخون کا پیاسا کون ہے؟

ان خیالات کا اظہار انہوں نے پیپلز پارٹی کے زیر اہتمام کراچی میں کارساز کے مقام پر جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کیا، انہوں نے کہا کہ پیپلزپارٹی کا سفربھٹو کی سوچ اور فلسفے سے شروع ہوا،50سال کے سفر میں پیپلز پارٹی نے بہت اتار چڑھاؤ دیکھے ہیں۔

سانحہ کارسازکو12برس گزر چکےہیں، شہید بی بی چاہتی تو سانحہ کارسازکے بعد گھر بیٹھ جاتیں، ہم آج بھی اپنے شہدا کو بھولے نہیں اور نہ ہی انہیں بھول سکتے ہیں، کوئی بتائے گا کہ ہمارے شہیدوں کے خون کا پیاسا کون ہے؟

بلاول بھٹو کا مزید کہنا تھا کہ بےنظیرشہید نےجان دے دی مگر کسی آمر کے سامنے سر نہیں جھکایا، کیا یہ وہ پاکستان ہے جس کےلیے ہمارے پیاروں نے قربانیاں دیں؟ کیا یہ وہ پاکستان ہے جس کا خواب جناح نے دیکھا تھا،
کیا کوئی بتائے گا کہ پاکستان دنیا میں تنہا کیوں ہے؟

بلاول بھٹو نے کہا کہ معیشت کا براحال ہے، سی پیک پر کام رک گیا ہے، وقت آگیا ہے کہ حکمرانوں کو گھر بھیجنے کیلئے فیصلہ کن سیاست کی جائے، موجودہ حکومت عوام کےمسائل حل نہیں کرسکتی۔

افسوسناک بات ہے کہ ہمارےاداروں کو متنازع بنایا گیا،چیئرمین پیپلزپارٹی نے کہا کہ سیاسی مخالفین کو پکڑنے کیلئے نیب کواستعمال کیا جاتا ہے، آصف زرداری کو جیل میں طبی سہولتیں نہیں دی جاتیں۔

میرے کارکنان اور سینئر ورکز کو ہراساں و تنگ کیا جاتا ہے، ہم ان ہتھکنڈوں سےنہ پہلے ڈرےتھے نہ اب ڈریں گے، ہم نے آمروں کی آنکھوں میں آنکھیں ڈالی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ کراچی سے کشمیرتک کے سفرکا آغاز ہوچکا ہے،23اکتوبر کو ہم تھر پارکر میں احتجاج کریں گے،27اکتوبر سندھ اور پنجاب کے بارڈرپر احتجاج کریں گے، ہمارا مطالبہ ہے کہ جمہوریت بحال کرو، ہم موجودہ جمہوریت کو نہیں مانتے۔

کب تک ووٹ کی چوری برداشت کرتے رہیں گے، یہ سوچ ہرمحب وطن پاکستانی کی ہے، ملک کو سیاسی بحران سے بچانےکا ابھی بھی وقت ہے، پارلیمان کو تالا لگ چکا ہے، سیاست سڑکوں پر آچکی ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں