The news is by your side.

Advertisement

کرونا دنیا کی آخری وبا، لیکن کیسے؟ بل گیٹس نے کتاب میں بتا دیا

جیسا کہ بل گیٹس طویل عرصے سے ایک عالمی وبا کے خطرات کے بارے میں خبردار کرتے رہے ہیں، اسی طرح اب انھوں نے کووِڈ 19 کی وبا کو دنیا کی آخری وبا بنانے کے لیے ایک کتاب لکھ لی ہے، جو مئی 2022 میں چھپ کر مارکیٹ میں آئے گی۔

مائیکرو سافٹ کے بانی بل گیٹس پُر امید ہیں کہ کرونا دنیا کی آخری وبا ہو سکتی ہے، اس سلسلے میں انھوں نے ایک کتاب لکھ لی ہے جس میں انھوں نے اس حوالے سے کئی اہم نکات پر گفتگو کی ہے۔

اپنی اس نئی کتاب کے بارے میں انھوں نے اپنے بلاگ گیٹس نوٹس پر بتایا، انھوں نے کہا اگرچہ ابھی ہم وبا کے اختتام کے قریب نہیں پہنچے، مگر ہم نے اس سے بہت کچھ سیکھا ہے کہ آئندہ اس طرح کی وبا کو پھیلنے سے کیسے روکا جا سکتا ہے۔

کتاب میں ایسے مخصوص اقدامات بتائے جائیں گے جن کی مدد سے معاشرہ مستقبل کی وباؤں کی روک تھام کر سکے گا۔ انھوں نے بلاگ میں لکھا یہ وہ چیز ہے جس کے بارے میں میں ایک طویل عرصے سے سوچ رہا ہوں، اور کووِڈ نے اس امر کو واضح کر دیا ہے کہ وبائی امراض انسانیت کے لیے ایک خطرہ ہیں اور دنیا کو ان کے خاتمے کو ترجیح دینے کی ضرورت ہے۔

اس کتاب میں اہم طبی عہدے داران جیسے امریکی صدر کے چیف میڈیکل ایڈوائرزر انتھونی فاؤچی اور عالمی ادارۂ صحت کے سربراہ سے کی جانے والی بات چیت سے سیکھے جانے والے اسباق بھی شامل ہوں گے۔

بل گیٹس نے لکھا میں اس وبا کے ابتدائی دنوں ہی سے کرونا کا جائزہ لیتا آ رہا ہوں، اس پر گیٹس فاؤنڈیشن کے اندر اور باہر کے بڑے ماہرین کے ساتھ مسلسل کام کیا، میں نے اس عمل میں بہت کچھ سیکھا ہے، یہ کہ ہم اگلی وبا کو کیسے روک سکتے ہیں، اور میں نے جو کچھ سنا ہے اسے لوگوں کے ساتھ شیئر کرنا چاہتا ہوں، لہٰذا میں نے اس بارے میں ایک کتاب لکھنا شروع کی کہ ہم اس بات کو کیسے یقینی بنا سکتے ہیں کہ کوئی بھی دوبارہ وبائی مرض کا شکار نہ ہو۔

گیٹس نے بتایا کہ اس کتاب کا نام How to Prevent the Next Pandemic (اگلی عالمگیر وبا کو کیسے روکا جائے؟) ہے، اور آپ اسے 3 مئی 2022 کو پڑھ سکیں گے، یہ کتاب امریکا میں Knopf اور بین الاقوامی سطح پر Penguin Random House کے تحت شائع کی جا رہی ہے۔

انھوں نے کہا کہ اگر ہم نے درست اقدامات اٹھائیں اور اس سلسلے میں مخصوص سرمایہ کاری کریں، تو ہم کووڈ 19 کو دنیا کی آخری عالمی وبا بنا سکتے ہیں۔ خیال رہے کہ ویکسینز کے لیے حمایت کرنے پر بل گیٹس سازشی خیالات کا ہدف بھی بنتے رہے ہیں، اور مائیکرو چپ کی افواہیں پھیلائی گئیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں