The news is by your side.

Advertisement

کراچی کی شاہراہوں پر لگے دیو قامت بل بورڈز کیخلاف کارروائی کا آغاز

کراچی : کے ایم سی انتظامیہ نے سپریم کورٹ کے احکامات پر فوری کارروائی کرتے ہوئے کراچی کے مختلف علاقوں سے دیوقامت بل بورڈز اور ہورڈنگز ہٹانے کیلئے کارروائی شروع کردی۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ کے چیف جسٹس کے واضح احکامات کے بعد کراچی میں دیو ہیکل بل بورڈز اور ہورڈنگز کے خلاف کارروائی کا آغاز کردیا گیا۔

شہر کی اہم شاہراہوں پر قائم دیو قامت بل بورڈز کو ہٹانے کا عمل شروع کردیا گیا ہے، کراچی کے ڈسٹرکٹ ساؤتھ میں اینٹی انکروچمنٹ کے ایم سی لینڈ کے عملے نے کارروائی کرتے ہوئے عبداللہ ہارون روڈ پر نصب دیوہیکل بل بورڈ اکھاڑ دیا۔

اس حوالے سے ڈائریکٹرلینڈ بشیرصدیقی نے میڈیا کو بتایا کہ مذکورہ بل بورڈ پوری رہائشی عمارت کے اطراف لگا ہوا تھا، بل بورڈ ہٹانے کے آپریشن میں دو دن لگے۔

آپریشن سے متعلق آگاہ کرتے ہوئے کے ایم سی انتظامیہ کا کہنا ہے کہ بل بورڈز اور ہورڈنگز کے خلاف کارروائی میں ہیوی مشینری اور کرینوں کا استعمال کیا گیا۔

مزید پڑھیں : سپریم کورٹ نے کراچی سے تمام بل بورڈز فوری ہٹانے کا حکم دے دیا

واضح رہے کہ گزشتہ روز سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں کراچی میں غیر قانونی بل بورڈز کی درخواست کی سماعت کرتے ہوئے چیف جسٹس گلزار احمد نے ریمارکس دیے تھے کہ پورے شہر میں بل بورڈ لگے ہوئے ہیں اور اگر یہ بل بورڈ گر گئے تو بہت نقصان ہوگا۔

ان کا کہنا تھا کہ عمارتوں پر اتنے بل بورڈز لگے ہوئے ہیں کہ کھڑکیاں اور ہوا بند ہوگئی ہے، لوگ ان عمارتوں میں رہتے کیسے ہیں جہاں نہ ہوا جاتی نہ روشنی، نہ دن کا پتہ چلتا ہے نہ رات کا۔ حکومت نام کی کوئی چیز ہی نہیں ہے، ہر بندہ خود مارشل لا بنا بیٹھا ہے۔

 

Comments

یہ بھی پڑھیں