The news is by your side.

Advertisement

گرفتار کرتے ہیں تو زیادہ خطرناک ہوں گا، بلاول بھٹو

کراچی: چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہےکہ حکومت اس وقت مثبت تنقید بھی برداشت نہیں کررہی، ہم سے سیاست کرنے کا حق چھینا جارہا ہے۔

تفصیلات کے مطابق چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری نے نیوز کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ مجھے گرفتاری کا کیوں ڈر ہوگا چیف جسٹس نے مجھے رہا کیا ہے، گرفتار کرتے ہیں تو زیادہ خطرناک ہوں گا، ہمت ہے تو گرفتار کرکے دکھاؤ، اس سے زیادہ سخت بات کروں گا۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ پیپلزپارٹی کو برسی منانے کی اجازت بھی نہیں دی جارہی ہے، شہید بی بی کی برسی منانے جارہے ہیں اور ہمیں نوٹسز بھیجے جارہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ حکومت پہلے دن سے پارلیمانی کو چلنے نہیں دے رہی ہے، نیب کی جانب سے مجھے غیرقانونی نوٹس بھیجا گیا ہے، نیب بتائے 24 دسمبر کوکیوں طلب کیا ہے، اپوزیشن کے خلاف جھوٹے کیسز بنائے جارہے ہیں۔

مزیدپڑھیں: احسن اقبال کی گرفتاری، بلاول کا نیب کے سامنے پیش نہ ہونے کا فیصلہ

بلاول نے کہا کہ احسن اقبال کی گرفتاری کی مذمت کرتے ہیں، نیب بطور ادارہ نہیں لیکن قانون کی حاکمیت پریقین رکھتا ہوں، آمرانہ طرز حکومت سے مسائل حل نہیں کرسکیں گے۔

چیئرمین پیپلزپارٹی نے کہا کہ کس کے کہنے پر میرا نام نیب میں شامل کیا گیا ہے،نیب میں پہلے بھی پیشہوئے اب بھی پیش ہوں گے، پہلے دباؤ میں آئے نہ اب آئیں گے، نیب آمرکا بنایاہوا کالا قانون ہے جسے ہم نہیں مانتے۔

انہوں نے کہا کہ حکومت عوام اور اپوزیشن کو ہراساں کرنا چاہتی ہے، یہ کیسا احتساب ہے چیئرمین نیب کہتے ہیں ہواؤں کا رخ تبدیل ہورہا ہے، اپنے حق پر کوئی سمجھوتہ نہیں کریں گے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں