The news is by your side.

Advertisement

کانگریس کو ووٹ کیوں ڈالا؟ بی جے پی رہنما کا ووٹر پر قاتلانہ حملہ

نئی دہلی: بھارت کی حکمراں جماعت بی جے پی کانگریس سے شدید خوفزدہ ہے اور اب اُس نے مخالفین کو ووٹ دینے والے ووٹرز پر قاتلانہ حملے شروع کردیے۔

تفصیلات کے مطابق بھارت میں لوک سبھا کے انتخابات مرحلہ وار جاری ہیں جس کے پانچ مراحل مکمل ہوچکے، پولنگ کے دوران پرتشدد واقعات بھی پیش آئے، خاتون الیکشن آفیسر سمیت متعدد شہری بھی مختلف واقعات میں ہلاک ہوئے۔

بھارتی میڈیا کی رپورٹ کے مطابق ریاست ہریانہ میں بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے رہنما نے اپوزیشن جماعت کانگریس کو ووٹ دینے پر اپنے ہی کزن پر قاتلانہ حملہ کیا، فائرنگ کے نتیجے میں نوجوان زخمی ہوگیا۔

مزید پڑھیں: ‘‘ تم میری ہٹ لسٹ پر ہو ‘‘ : بی جے پی رہنما کی الیکشن آفیسر کو سنگین دھمکی

ٹائمز آف انڈیا کی رپورٹ کے مطابق ہریانہ کے ضلع جَھجھر میں بی جے پی کے رہنما دھرمندر سیلانی نے کانگریس کو ووٹ دینے پر اپنے کزن راجا سنگھ پر غیر قانونی ہتھیار سے فائرنگ کی جس کے نتیجے میں انہیں تین گولیاں لگیں۔

راجا سنگھ کی ٹانگوں میں دو اور پیٹ میں ایک گولی لگی جس کے بعد انہیں اہل خانہ نے اسپتال پہنچایا البتہ بی جے پی کے خوف کی وجہ سے علاقہ مکینوں نے معاملے میں مکمل خاموشی اختیار کر رکھی۔ ڈاکٹرز کے مطابق راجا سنگھ کا کامیاب آپریشن کر کے اُن کے پیٹ کی گولی نکال لی گئی جس کے بعد اُن کی حالت خطرے سے باہر ہے۔

پولیس حکام نے واقع کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ بی جے پی کے رہنما کے خلاف مقدمہ درج کرلیا جبکہ ملزم کو گرفتار نہیں کیا جاسکا۔ دھرمندر سیلانی بہادر گڑھ سِوک باڈی کے سابق رکن اور بی جے پی کے مَندل یونٹ کے عہدیدار ہیں جبکہ ان کے بڑے بھائی ہریندر سنگھ، کانگریس کے مقامی رہنما اور سابق کونسلر ہیں۔

یہ بھی پڑھیں: ’ووٹ نہیں دیا تو قبر نہیں ملے گی‘ : بی جے پی کے امیدوار کی مسلمانوں کو دھمکی

پولیس کے مطابق راجا سنگھ نے ووٹ ڈالنے کے لیے ‘بی جے پی’ کے بجائے کانگریس کا انتخاب کیا اور اُس کے امیدوار کو ووٹ دیا جس کے بعد اُن کا دھرمندر سیلانی سے جھگڑا ہوا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں