The news is by your side.

Advertisement

تبت: سیب کی رنگت گہری جامنی کیوں ہے؟

وسط ایشیا میں واقع تبت کو دنیا کی چھت کہا جاتا ہے۔ یہ دنیا کا بلند ترین خطہ ہے جو سطحِ سمندر سے ہزاروں فٹ اونچا ہے۔

برف سے ڈھکے پہاڑوں اور دنیا کے چند بلند ترین قصبات والے اس علاقے کو مشہور پہاڑی سلسلوں کی وجہ سے بھی پہچانا جاتا ہے اور اسی تبت کے بلند و بالا مقامات کے ایک درخت کا سیب بھی دنیا میں بہت مشہور ہے، لیکن لوگوں کی اکثریت اس پھل کے ذائقے سے ناآشنا ہے۔

سیب عموماً لال، ہرے، یا ان کا چھلکا پیلے رنگ کا ہوتا ہے، جو بازاروں میں‌ عام دست یاب ہے، لیکن تبت کے درخت کا یہ سیب گہرا جامنی یا سیاہی مائل ہوتا ہے۔ یہ نایاب سیب ہے جسے “بلیک ڈائمنڈ ایپل” کہا جاتا ہے۔

بلیک ڈائمنڈ ایپل چین کے بازاروں تک پہنچتا ہے، مگر یہ عام سیب کے مقابلے میں منہگا فروخت ہوتا ہے اور اسے نایاب خیال کیا جاتا ہے۔ اس کا ذائقہ میٹھا ہوتا اور یہ عام سیب کی طرح اندر سے سفید گودے والا ہوتا ہے۔ ماہرین کے مطابق اس کا چھلکا نسبتا موٹا ہوتا ہے۔

یہ تبتی سیب سطحِ سمندر سے کئی میٹر کی بلندی پر موجود اپنے درخت پر بہار دکھاتا ہے اور چوں کہ دنیا کے اس بلند علاقے میں دن اور رات کے درجہ حرارت میں بہت زیادہ فرق ہوتا ہے جس کے دوران اس پھل کو بہت زیادہ سورج کی روشنی ملتی ہے اور اس کی الٹرا وائلٹ شعاعیں اس کے گہرے جامنی رنگ کا سبب ہیں۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں