The news is by your side.

Advertisement

’بلیک پینتھر‘ سعودی عرب میں نمائش کے لیے پیش کی جانے والی پہلی فلم

ریاض: سعودی عرب میں 35 سال بعد پہلا سنیما کھولا جارہا ہے اور اس میں نمائش کے لیے پیش کی جانے والی پہلی ’بلیک پینتھر‘ ہوگی۔

سعودی عرب میں گزشتہ 35 سال کی پابندی کے بعد ملک میں پہلا سنیما گھر 18 اپریل کو کھول دیا جائے گا جس میں نمائش کے لیے پیش کی جانے والی پہلی فلم بلیک پینتھر ہوگی۔

فلم کی ٹکٹوں کی فروخت کا آغاز کردیا گیا ہے جسے لوگوں کی جانب سے بے حد پذیرائی مل رہی ہے۔

دارالحکومت ریاض میں کنگ عبداللہ فنانشل ڈسٹرکٹ میں واقع یہ پہلا سینما مرد و خواتین دونوں کے لیے ہے۔

سعودی حکومت کا ارادہ ہے کہ اگلے 5 برسوں میں ملک کے 15 شہروں میں 30 سے 40 سنیما گھر کھولے جائیں گے۔

گو کہ یہ ملک میں کھولا جانے والا پہلا سنیما نہیں ہے۔ 35 برس قبل بھی ملک میں سنیما موجود تھے تاہم وہ صرف مردوں کے لیے مخصوص تھے۔ علاوہ ازیں گھروں میں نجی طور پر بڑی اسکرین لگا کر فلموں کی اسکریننگ کا اہتمام کیا جاتا تھا۔

اس مختصر سی سنیما انڈسٹری کو 35 سال قبل ممنوع قرار دے کر اس پر پابندی عائد کردی گئی۔

ان 35 سالوں میں بھی فلم اور ڈاکیومینٹری بنانے کی کوششیں جاری رہیں تاہم اب ملک میں ایک بار پھر باقاعدہ طور پر سنیما انڈسٹری کو بحال کردیا گیا ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں