سوشل میڈیا پر گستاخانہ مواد کی تشہیر کے 4ملزمان کے ریمانڈ میں توسیع -
The news is by your side.

Advertisement

سوشل میڈیا پر گستاخانہ مواد کی تشہیر کے 4ملزمان کے ریمانڈ میں توسیع

اسلام آباد :  سوشل میڈیا پر گستاخانہ مواد کی تشہیر کے چار ملزمان کے ریمانڈ میں 4 روز کی توسیع کی درخواست منظور کر لی گئی۔

تفصیلات کے مطابق سوشل میڈیا پر گستاخانہ مواد کی تشہیر کیس میں ایف آئی اے کی جانب سے گرفتار چار ملزمان کو 10 روزہ جسمانی ریمانڈ مکمل ہونے پر نسداد دہشت گردی کی عدالت کے جج کوثر عباس زیدی کے روبرو پیش کیا گیا، ملزمان کو سخت سکیورٹی میں عدالت لایا گیا۔

اس موقع پر عدالت نے ملزمان کے فیس بک اکاؤنٹ سے متعلق ایف آئی اے سے استفسار کیا کہ اب تک ملزمان کے اکاؤنٹ سے کیا معلومات حاصل ہوئیں جس پر ایف آئی اے کی جانب سے عدالت کو بتایا گیا کہ برآمد کئے جانے والے کمپیوٹرز کی فرانزک رپورٹ ابھی تک موصول نہیں ہوسکی، ملزمان کا مزید ریمانڈ دیا جائے۔

اس موقع پر جج کوثر عباس زیدی نے ملزمان سے استفسار کیا کہ کیا آپ پر تشدد تو نہیں کیا گیا؟ ملزمان نے جواب دیا کہ ہم پر کوئی تشدد نہیں ہوا عدالت نے ایف آئی اے کو ملزمان کا میڈیکل کرانے کاحکم دیتے ہوئے کل تک رپورٹ عدالت میں پیش کرنے کا حکم دیا۔


مزید پڑھیں : گستاخانہ مواد کیس، 4 ملزمان ریمانڈ پر ایف آئی اے کے حوالے


ایف آئی اے نے ملزمان کے ریمانڈ میں مزید توسیع کی استدعا کی جسے منظور کرتے ہوئے عدالت نے چار روزہ جسمانی ریمانڈ کی درخواست منظور کرلی اور سماعت بیس اپریل تک ملتوی کر دی گئی۔

یاد رہے کہ گزشتہ سماعت میں ایف آئی اے ذرائع کا کہنا تھا کہ توہین رسالت کیس کا دائرہ کار بین الاقوامی این جی اوز تک بڑھایا جا رہا ہے، جو سوشل میڈیا پر گستاخانہ مواد شائع کرنے والے اور توہین رسالت کے لیے فیس بک کے مختلف صفحات کا استعمال کرنے والے افراد کی حوصلہ افزائی اور فنڈنگ کیا کرتی تھیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں