The news is by your side.

Advertisement

ٹک ٹاک پر پابندی کیوں لگائی؟ عدالت نے بڑا حکم دے دیا

اسلام آباد : اسلام آباد ہائی کورٹ نے پی ٹی اے کو ٹک ٹاک پر پابندی لگانے سے متعلق آئندہ سماعت پرجواب دینے کا حکم دیتے ہوئے حکومت اور پی ٹی اےسوشل میڈیا ایکسپرٹس کے نام جمع کروائے۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد ہائی کورٹ میں ٹک ٹاک پر پابندی کےخلاف کیس کی سماعت ہوئی ، سماعت اسلام آبادہائیکورٹ کےچیف جسٹس اطہرمن اللہ نے کی۔

عدالت نے استفسار کیا پی ٹی اے نے پابندی کیوں لگائی؟آئندہ سماعت پرمطمئن کرے اور حکم دیا کہ حکومت اور پی ٹی اےسوشل میڈیا ایکسپرٹس کے نام جمع کروائے۔

عدالت نے ریمارکس میں کہا عدالت نے جو ہدایت کی تھی اس کا جواب موجود نہیں، پی ٹی اے نے پشاور اور سندھ ہائی کورٹ میں بیان حلفی دیا ، بیان حلیفی میں کہا گیا ٹک ٹاک پرایک فیصد مواد قابل اعتراض ہوتا ہے۔

متوسط طبقہ اپنے ٹیلنٹ کو اجاگر کرکے اس پلیٹ فارم سے کمائی کررہا ہے، پلیٹ فارم کو بلاک کرتے ہوئے کیا کسی ایکسپرٹس سے رائے لی گئی؟ اٹارنی جنرل نے بتایا تھاکہ وہ اسٹیک ہولڈرز سے مشاورت کریں گے، پلیٹ فارم کو بلاک کرنا آئین میں دئیے گئے حقوق کی خلاف ورزی ہے۔

عدالت نے کہا کیوں نہ عدالت ٹک ٹاک کو کھولنےکاآرڈردے؟ اور پی ٹی اے کو جواب دینے کا حکم دیتے ہوئے سماعت22 نومبر تک ملتوی کردی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں