The news is by your side.

Advertisement

مقبوضہ وادی میں 2700 اجتماعی قبروں کا انکشاف

سری نگر : مقبوضہ وادی میں 2700اجتماعی قبروں کا انکشاف ہوا ہے جبکہ 60 سے زائد گزرنے کے بعد اسی لاکھ کشمیری بھارت کی ریاستی دہشت گردی کے باعث قیدیوں کی زندگی گزارنے پرمجبورہیں۔

تفصیلات کے مطابق انٹر نیشنل ہیومن رائٹس کورٹ اور کشمیر میں عدالتِ انصاف (آئی پی ٹی کے) نامی این جی او کی جانب سے شائع کردہ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں قابض بھارتی فوج کے انسانیت سوز مظالم میں بتدریج اضافہ ہو رہا ہے، وادی کے شمال میں 55دیہات میں کھدائی کے دوران دو ہزار سات سو اجتماعی قبروں کا انکشاف ہوا ہے۔

یاد رہے اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل انتونیو گوتریس نے مقبوضہ کشمیر کی صورتحال پر شدید تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ مسئلہ کشمیر کے حل کے لیے پاکستان اور بھارت مذاکرات کریں۔

مزید پڑھیں : پاکستان اور بھارت مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے مذاکرات کریں، سیکریٹری جنرل اقوام متحدہ

ترجمان اقوام متحدہ کے مطابق گوتریس کا کہنا تھا کہ مقبوضہ کشمیر میں کرفیو کو 60 روز گزر گئے ہیں اور مقبوضہ وادی میں اسی لاکھ لوگ قید ہیں، جبکہ مقبوضہ کشمیر پر اقوام متحدہ کا موقف تبدیل نہیں ہوا۔

واضح رہے مقبوضہ کشمیرمیں کرفیو کو باسٹھ روز ہوگئے اور اسی لاکھ کشمیری بھارت کی ریاستی دہشت گردی کے باعث قیدیوں کی زندگی گزارنے پرمجبورہیں۔

وادی میں دواؤں اورکھانے پینے کی اشیا کا بحران ہے، مواصلاتی بلیک آؤٹ ہے جبکہ بھارتی فورسزچھاپوں میں نوجوانوں کوبلاجوازگرفتارکرکے بدترین تشددکانشانہ بنا رہی ہیں اور حریت قیادت بدستور قید اور نظر بند ہیں ۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں