The news is by your side.

Advertisement

عجیب دکھنے کیلئے برازیلین شہری نے ناک اور دو انگلیاں کٹوا دیں

براسیلیا : جسم پر نقش و نگار بنوانے کے شوقین برازیلین شہری نے ناک کے بعد اپنے ہاتھوں کی دو انگلیاں کٹوا دیں تاکہ وہ شیطان لگ سکے۔

مغربی ممالک میں ایسے افراد کی تعداد بہت قلیل جو اپنے جسم کو سیاہی سے رنگوانے (ٹیٹو) کے شوقین ہیں لیکن انہیں میں کچھ افراد ایسے بھی ہیں جو اپنے جسم میں تبدیلی کے خواہاں ہیں۔

برازیل سے تعلق رکھنے والے 44 سالہ مائیکل فارو ڈو پراڈو نامی شخص نے اپنے پورے جسم کو ٹیٹو سے بھرا ہوا ہے، مذکورہ شخص خود بھی ٹیٹو آرٹسٹ ہے لیکن وہ اپنے جسم پر نقش و نگار بنوانے کےلیے دوسرے آٹسٹ کی خدمات حاصل کرتے ہیں۔

مائیکل جسم پر ٹیٹو بنوانے کے ساتھ ساتھ اپنے جسم میں کئی تبدیلیاں بھی کروا چکے ہیں۔

مائیکل کو دراصل انسانی شیطان بننے کی خواہش ہے جس کی خاطر گزشتہ برس انہوں نے ایک سرجری کے ذریعے اپنی آدھی ناک کٹوا دی تھی اور اب انہوں نے اپنے بائیں ہاتھ کی انگوٹھی پہننے والی اور دائیں ہاتھ کی درمیانی انگلی بھی کٹوا دی ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق مائیکل گزشتہ کئی برسوں سے انٹرنیشنل میڈیا کی زینت بنے ہوئے ہیں کیوں کہ انہوں نے سرجری کے ذریعے اپنے سر اور چہرے میں کافی تبدیلیاں کروائیں مصنوعی سینگ اورکسی حیوان کی طرح سلور دانت لگوائے جو انتہائی خوفناک ہیں۔

اہلیہ کا کہنا ہے کہ مائیکل دنیا میں تیسرے فرد ہیں جنہوں نے اس قسم کی سرجری کروائی ہے۔

مائیکل نے اپنے تصاویر سوشل میڈیا پر شیئر کیں، جس میں ان کے بائیں ہاتھ کی انگوٹھی پہننے والی انگلی اور دائیں ہاتھ کی درمیانی انگلی کٹی ہوئی ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق مائیکل نے اپنی اس سرجری کےلیے 5000 برازیلین ریسز (ڈیڑھ لاکھ روپے سے زائد پاکستانی روپے) خرچ کیے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں