The news is by your side.

Advertisement

موڈرنا ویکسین لگتے ہی امریکا میں ڈاکٹر کی طبیعت خراب ہو گئی

میساچوسٹس: بوسٹن میں ایک ڈاکٹر کی طبیعت کرونا وائرس کی موڈرنا ویکسین لگتے ہی شدید طور پر خراب ہو گئی۔

امریکی میڈیا کی رپورٹ کے مطابق ریاست میساچوسٹس کے شہر بوسٹن میں ایک ڈاکٹر کو جمعرات کو موڈرنا کی کرونا ویکسین لگتے ہی شدید الرجی ری ایکشن ہوا۔

ڈاکٹر حسین صدر زادہ بوسٹن میڈیکل سینٹر میں بڑی عمر کے افراد میں کینسر کے ماہر ہیں، اور انھیں شیل فش سے الرجی ہے، ان کا کہنا تھا کہ جیسے ہی انھیں کرونا ویکسین لگی، انھیں شدید ری ایکشن ہوا۔

ڈاکٹر کے بیان کے مطابق انھیں موڈرنا کی ویکسین سے چکر آنے لگے تھے اور دل کی دھڑکن تیز ہو گئی تھی۔

یہ عوامی سطح پر پہلا شدید ری ایکشن تھا جو موڈرنا کی ویکسین سے ہوا، اور یہ امریکا بھر میں ہونے والی ویکسی نیشن مہم کے پہلے ہی ہفتے میں سامنے آیا۔

بوسٹن میڈیکل سینٹر کے ترجمان ڈیوڈ کبی نے جمعے کو ایک بیان میں کہا کہ ڈاکٹر صدر زادہ نے محسوس کیا کہ انھیں الرجک ردِ عمل پیدا ہو رہا ہے، اور انھیں اس بات کی اجازت دی گئی کہ وہ الرجک ری ایکشن کے لیے اپنی مخصوص دوا خود لیں۔

ترجمان کا کہنا تھا کہ ڈاکٹر صدر زادہ کو اسپتال کے ایمرجنسی شعبے میں لے جایا گیا تھا، جہاں ان کی صحت کی دیکھ بھال کی گئی، اور مناسب علاج کے لیے انھیں گھر جانے دیا گیا اور اب وہ بالکل ٹھیک ہیں۔

امریکی ادارے فوڈ اینڈ ڈرگ ایڈمنسٹریشن کے حکام نے چند دن قبل کہا تھا کہ وہ الرجک ری ایکشن کے 5 ایسے کیسز کی تحقیقات کر رہے ہیں، جو فائزر اور بائیو این ٹیک کی کرونا ویکسین لگنے کے بعد سامنے آئے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں