site
stats
پاکستان

ایران کی ایک شاہراہ ’شاعرِمشرق‘ کے نام سے منسوب ہے

مشہد: ایران کے مشہورشہرمشہد میں ایک شاہراہ شاعرمشرق علامہ ڈاکٹرمحمد اقبال کے نام سے منسوب ہے۔

علامہ محمد اقبال کے نام سے منسوب اس شاہراہ کا نام ’’بولیوارڈ اقبالِ لاہوری‘‘ ہے۔

شاعرِمشرق علامہ محمد اقبال نے کبھی بھی ایران کا دورہ نہیں کیا تاہم ان کے فارسی کلام کے سبب ایران میں ان کے قارئین کی تعداد بہت زیادہ ہے۔

علامہ اقبال نے کل بارہ ہزاراشعارکہے ہیں جن میں سے سات ہزارفارسی میں سے ہیں۔ ان کے فارسی مجموعہ ہائے کلام اسرارِخودی (1915)، رموزِ بے خودی (1917)، پیامِ مشرق (1923)، زبورِعجم (1927)، جاوید نامہ(1932) اورارمغان حجاز (1938) بے پناہ مشہورہیں۔

کہاجاتا ہے کہ فارسی زبان نے ہرصدی میں ایک بڑا شاعرپیدا کیا ہے جن میں رومی، عمر خیام، سعدی، نذیری، اور فردوسی شامل ہیں تاہم بیسوی صدی میں فارسی زبان کے سب سے بڑے شاعرکا تعلق ایران سے نہیں بلکہ لاہور سے ہے اورایرانی انہیں اقبالِ لاہوری کے نام سے جانتے ہیں۔

انقلابِ ایران کے بڑے بڑے رہنما علامہ اقبال کے کلام سے بے حد متاثرہیں، ایران کے روحانی رہنما آیت اللہ خامنہ ای نے 1986 میں ایک کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ایران آج علامہ اقبال کے دکھائے ہوئے راستے پرعمل پیرا ہے۔

یہ تصویرسماجی رابطے کی ویب سائٹ فیس بک پرکامران آن بائیک نامی پیج نے شیئرکی ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top