The news is by your side.

Advertisement

آٹھ سالہ بچہ زیادتی کے بعد قتل، لاش درخت سے لٹکا دی

چمن : قلعہ عبداللہ میں آٹھ سالہ بچے کو زیادتی کے بعد قتل کرکے اس کی لاش درخت سے لٹکا دی گئی، ورثاء کی مدعیت میں نامعلوم افراد کے خلاف مقدمہ درج کر لیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق صوبہ بلوچستان کے علاقے  چمن کےقریب قلعہ عبداللہ میں آٹھ سالہ بچے کو زیادتی کے بعد قتل کردیا گیا اور قتل کے بعد لاش درخت سے لٹکا دی، لیویز حکام نے بتایا کہ مئی زئی آڈہ کلی داویان میں 8 سال کے انعام اللہ کو درندگی کا نشانہ بنانے کے بعد قتل کیا گیا، اس کی لاش درخت سے لٹکی ہوئی ملی۔

پوسٹ مارٹم میں بچے کے ساتھ بدفعلی کی تصدیق ہوگئی ہے اور ورثاء کی مدعیت میں نامعلوم افراد کے خلاف مقدمہ درج کر لیا گیا ہے۔

اسسٹنٹ کمشنرجہانزیب شیخ نے بتایا بچے کے ساتھ بدفعلی کی گئی اور گلا دبا کر قتل کیا،انعام اللہ گذشتہ شام سے لاپتہ تھا ، لاش ایک باغ میں درخت سے لٹکی ملی۔

یاد رہے 7 اکتوبر کو چارسدہ میں ڈھائی سال کی بچی کو زیادتی کے بعد بے رحمی سے قتل کردیا گیا تھا ، میڈیکل رپورٹ کے مطابق بچی کو اٹھارہ گھنٹے پہلے زیادتی کا نشانہ بنایا گیا اور اُس کا پیٹ اور سینہ چاک کر کے قتل کیا گیا تھا۔

اہل خانہ کے مطابق زینب اغوا ہوئی تھی، بعد ازاں اُس کی لاش پشاور میں واقع کھیت سے برآمد ہوئی تھی۔

پولیس نے زینب زیادتی و قتل کیس میں 8 مشتبہ افراد کو گرفتار کیا جبکہ بتایا گیا ہے کہ مرکزی ملزم تاحال قانون کی گرفت سے باہر ہے۔ متاثرہ بچی کے والد کا کہنا تھا کہ بیٹی کے قتل میں ملوث سفاک درندوں کو سرعام پھانسی دی جائے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں