The news is by your side.

Advertisement

باپ اور بہن کو ڈوبنے سے بچانے کے لیے بچے کا ناقابل یقین کارنامہ

فلوریڈا: امریکا میں ایک سات سالہ بچے نے ناقابل یقین کارنامہ انجام دیتے ہوئے اپنے باپ اور چھوٹی بہن کو ڈوبنے سے بچا لیا۔

تفصیلات کے مطابق ریاست فلوریڈا کے علاقے مندارن پوائنٹ میں جمعے کو دریائے سینٹ جونز میں 7 سالہ بچے نے ایک گھنٹہ تیر کر تیز بہاؤ میں پھنسے باپ اور چار سالہ بہن کو بچایا۔

شہر جیکسن ویل میں پیش آئے اس واقعے میں چھوٹے سے بچے نے ایک ہیرو کا کردار ادا کیا، اسے اپنے والد اور چھوٹی بہن کو بچانے کے لیے مدد لانے کی غرض سے ساحل تک پہنچنے کے لیے ایک گھنٹے تک تیرنا پڑا۔

رپورٹس کے مطابق چھٹی کے دن اسٹیون پاسٹ نامی شخص اپنے بیٹے چیز اور بیٹی ابیگیل کے ساتھ دریائے سینٹ جونز میں کشتی پر تفریح کر رہے تھے کہ دریا کے تیز بہاؤ کی وجہ سے وہ بڑی مشکل میں پھنس گئے۔

اسٹیون کشتی کو پانی میں لنگر انداز کر کے مچھلیاں پکڑ رہے تھے، جب کہ بچے دریا میں تیراکی کر رہے تھے، چیز فاسٹ نے مقامی ٹی وی سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ اس کی بہن تیز بہاؤ کے آگے خود کو قابو نہیں رکھ پا رہی تھی اس لیے کشتی کو پکڑ لیا، مجھے بھی بہاؤ کی وجہ سے کشتی کا سہارا لینا پڑا۔

اسٹیون فاسٹ نے بچوں کو اس حالت میں دیکھا تو بیٹی کو بچانے کے لیے پانی میں کودے جب کہ چیز نے ساحل کی طرف تیرنا شروع کر دیا، چوں کہ ساحل بہاؤ کے مخالف سمت میں تھا اس لیے اسے ساحل پر پہنچنے میں ایک گھنٹہ لگا۔

چیز نے بتایا کہ وہ بہت خوف زدہ ہو گیا تھا، اسٹیون کا کہنا تھا کہ انھوں نے بیٹی کو تھاما ہوا تھا لیکن بہاؤ کے آگے بہت مشکل ہو رہی تھی، انھیں لگ رہا تھا کہ بیٹی ان کے ہاتھ سے نکل جائے گی کیوں کہ وہ خود کو بھی بڑی مشکل سے سنبھال رہے تھے۔

بچے کا کہنا تھا کہ اس دوران وہ کبھی ڈوگی پیڈل انداز میں تیرتا رہا، اور کبھی تھک کر الٹا لیٹ کر تیراکی کرتا، ساحل پر پہنچ کر اس نے قریبی گھر جا کر مدد طلب کی، جس پر جیکسن ویل کا ریسکیو ڈیپارٹمنٹ اور دیگر ادارے متحرک ہو گئے۔

ریسکیو ٹیموں نے اسٹیون اور ابیگیل کو ایک گھنٹے بعد کشتی سے تقریباً ایک میل دور پایا، اور ریسکیو کیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں