The news is by your side.

Advertisement

4 ماہ تک مسلسل ہچکیاں، مریض خطرناک بیماری کا شکار نکلا

نئی دہلی: بھارت میں ایک شخص کو 4 ماہ تک مسلسل ہچکیاں آتی رہیں اور چیک اپ کے بعد اس میں دماغی ٹیومر کی تشخیص ہوئی۔

بھارتی میڈیا کے مطابق 30 سالہ مریض کی مسلسل ہچکیوں کی ذمہ دار اس کے دماغ میں موجود رسولی نکلی، مریض گزشتہ 4 ماہ سے ہچکیوں کا شکار تھا، جس نے اس کا کھانا پینا، سونا جاگنا سب برباد کردیا تھا۔

آل انڈیا انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز کے ڈاکٹر ناگا سبرا منایم ویمپالی کا کہنا ہے کہ ہمالیائی خطے سے تعلق رکھنے والے اس مریض کو ہچکیوں کے ساتھ ساتھ 2 ہفتوں سے شدید سر درد کی شکایت بھی لاحق ہوگئی تھی، جس پر اس کے دماغ کا سی ٹی اسکین کیا گیا تھا۔

اسکیننگ رپورٹ کے نتائج سے انکشاف ہوا کہ مذکورہ فرد انٹرنسک پونٹن گلیوما نامی ایک بیماری میں مبتلا ہے جو کہ دماغی رسول کی خطرناک اور تقریباً ناقابل علاج قسم ہے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ یہ دماغی رسولی ہچکیوں پر ردعمل دینے والے عضلات اور اعصاب کو کنٹرول کرنے والے دماغی خلیات پر اثر انداز ہورہی تھی جس کی وجہ سے مریض کو گزشتہ چار ماہ سے مسلسل ہچکیاں آرہی تھی۔

ڈاکٹر ویمپالی نے بتایا کہ اس دماغی رسولی کو بذریعہ جراحی ہٹانا ناممکن ہے کیوں کہ یہ حصہ تمام عصبی خلیات سے مربوط ہوتا ہے، ہم نے مریض کا شعاعوں سے علاج کرنے کا فیصلہ کیا اور 8 دن کی ٹریٹمنٹ کے بعد مریض کی ہچکیوں میں کمی آنی شروع ہوگئی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں