The news is by your side.

Advertisement

بھٹوں کو زگ زیگ ٹیکنالوجی پر منتقل کیا جائے، لاہور ہائی کورٹ

لاہور: لاہور ہائی کورٹ نے اسموگ سے متعلق کیس کی سماعت کے دوران ریمارکس دیے کہ یہ آنے والی نسلوں کے مستقبل کا معاملہ ہے، معاملے کو سنجیدہ لیا جائے، بھٹوں کو زگ زیگ ٹیکنالوجی پرمنتقل کیا جائے۔

تفصیلات کے مطابق لاہور ہائی کورٹ میں نامزد چیف جسٹس مامون رشید شیخ نے اسموگ،ماحولیاتی آلودگی کے خلاف کیس کی سماعت کی۔ عدالت نے سماعت کے دوران اسموگ کے تدارک کے حوالے سے اقدامات کی تفصیلی رپورٹ طلب کر لی۔

لاہور ہائی کورٹ نے ریمارکس دیے کہ یہ آنے والی نسلوں کے مستقبل کا معاملہ ہے، معاملے کو سنجیدہ لیا جائے، بھٹوں کو زگ زیگ ٹیکنالوجی پرمنتقل کیا جائے۔

عدالت نے ریمارکس دیے کہ ماحول دوست گاڑیوں کی ٹیکنالوجی پرعملدرآمد کے لیے کیا اقدامات کیے گئے، دھواں چھوڑنے والی گاڑیوں کے خلاف کیوں کارروائی نہیں کی جا رہی۔

لاہور ہائی کورٹ نے ریمارکس دیے کہ ناقص پیٹرول کی فروخت میں ملوث افراد کے خلاف کیا کارروائی کی گئی، عدالت نے شور، دھواں اور ناقص پٹرول کا معاملہ سب کمیٹی کے سامنے رکھنے کا حکم دیا۔

سرکاری وکیل نے کہا کہ پلاسٹک، ربڑ جلانے کی روک تھام کا نیا قانون لایا جا رہا ہے، عدالت نے استفسار کیا کہ کیا درختوں کی جیو ٹیگنگ ممکن ہے، جس پر سرکاری وکیل نے جواب دیا کہ سیٹلائٹ ٹیکنالوجی کے ذریعے ایسا ممکن ہے۔

بعدازاں عدالت نے اسموگ کے تدارک کے حوالے سے اقدامات کی تفصیلی رپورٹ طلب کرتے ہوئے کیس کی سماعت ملتوی کر دی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں