The news is by your side.

Advertisement

برکس اعلامیہ کو یکسرمسترد کرتے ہیں، ترجمان دفترخارجہ

اسلام آباد : دفتر خارجہ کے ترجمان نے برکس اعلامیہ پر اپنے رد عمل میں کہا ہے کہ افغانستان سمیت خطے میں کئی دہشت گرد گروپ موجود ہیں، ٹی ٹی پی اور جماعت الاحرار نامی تنظیمیں پاکستان میں دہشت گردی میں ملوث ہیں، وزیر دفاع خرم دستگیر کا کہنا ہے کہ پاکستان کا دفاع محفوظ ہاتھوں ہے۔

یہ بات انہوں نے اپنے جاری بیان میں کہی، ترجمان دفتر خارجہ نفیس ذکریا کا برکس اعلامیہ کو یکسر مسترد کرتے ہوئے کہنا تھا کہ پاکستان کو جنوبی ایشیا اور خطے کو درپیش دہشت گردی کے خطرے پرتشویش ہے۔

ٹی ٹی پی اور جماعت الاحرار جیسی دہشت گرد تنظیمیں افغانستان میں کام کررہی ہیں، ان تنظیموں کی افغانستان میں موجودگی امن کیلئے خطرہ ہے، خطےمیں بڑھتے انتہا پسندانہ نظریات اور عدم برداشت پر باعث تشویش ہے۔

پاکستان میں دہشتگردوں کی محفوظ پناہ گاہیں نہیں، خرم دستگیر

علاوہ ازیں وفاقی وزیر دفاع خرم دستگیر نے کہا ہے کہ پاکستان میں دہشت گردوں کی کوئی محفوظ پناہ گاہیں نہیں، چالیس فیصد افغانستان دہشت گردوں کی محفوظ پناہ گاہ ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کا دفاع محفوظ ہاتھوں ہے، ٹرمپ کے بیان کے بعد پاکستان میں غیرضروری خطرے کی گھنٹیاں بجائی جا رہی ہیں۔

ہماری خارجہ پالیسی ناکام ہوگئی ہے، سید خورشید شاہ

دریں اثناء قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر سید خورشید شاہ نے برکس اعلامیہ پر اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے اپنے بیان میں کہا ہے کہ قربانیوں کے باوجود پاکستان کو دہشت گرد قرار دینا افسوس ناک ہے۔

انہوں نے کہا کہ خارجہ پالیسی کی ناکامی کا یہ عالم ہے کہ ہم اپنے دوست ممالک کو بھی قائل کرنے میں ناکام ہو رہے ہیں جبکہ بھارت اپنی خارجہ پالیسی کی وجہ سے آگے بڑھ رہا ہے۔

 


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں