The news is by your side.

Advertisement

معزول صدر عمر البشیر کے ایک بہنوئی اور دو سابق نائبین کو گرفتار لیا گیا

خرطوم : سوڈان میں حکام کی جانب سے سابق حکومت کی قیادت اور اہم شخصیات کی گرفتاری کا سلسلہ جاری ہے۔ اس سلسلے میں معزول صدر عمر البشیر کے ایک بہنوئی اور دو سابق نائبین کوگرفتار لیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق افریقی ملک سوڈان میں ایک ہفتے کے قبل 30 سال پرانی حکومت کا عوامی احتجاج کے نیتجے میں خاتمہ ہوا تھا جس کے بعد فوج نے سابق صدر عمر البشیر کو گرفتار کرکے ان کے قریبی ساتھیوں و عزیزوں کی گرفتاری بھی شروع کردی تھی۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ گرفتار ہونے والے نائبین حسبو محمد عبد الرحمن اور محمد عثمان ہیں۔

سابق حکومت کی قیادت اس وقت کوبر جیل میں موجود ہے جہاں ان افراد کو انفرادی سیل میں نہیں بلکہ عام قیدیوں کے وارڈ میں رکھا گیا ہے۔

باوثوق ذرائع نے تصدیق کی ہے کہ جیل میں سے زیادہ شخصیات موجود ہیں۔ ان میں عمر البشیر کی جماعت نیشنل کانگریس پارٹی کے رہنماؤں کے علاوہ سابق حکومت میں ایگزیکٹو پوسٹ پر رہنے والے افراد بھی شامل ہیں جن کے بارے میں شبہ ہے کہ ان کا سیاسی اور اقتصادی کردار رہا۔

یاد رہے کہ سوڈان کے سابق صدر عمر البشیر کو گزشتہ ہفتے خرطوم کے نواحی علاقے بحری میں واقع کوبر جیل منتقل کر دیا گیا تھا۔

برطانوی خبر رساں ایجنسی نے جیل کے ایک ذریعے کے حوالے سے بتایا کہ البشیر شدید سیکورٹی کے تحت ایک انفرادی سیل میں زیر حراست ہیں۔ سوڈان میں جنرل پراسیکیوشن نے عمر البشیر کے خلاف منی لانڈرنگ اور بھاری رقوم قبضے میں رکھنے کے الزامات عائد کیے تھے۔

مزید پڑھیں : سوڈان : فوجی کونسل کے سربراہ نے ایک دن بعد ہی استعفیٰ دے دیا

خیال رہے کہ سوڈان کی فوجی کونسل کے سربراہ و وزیر دفاع عود بن عوف نے سابق آمر عمر البشیر کا تختہ الٹنے کے ایک دن بعد ہی استعفیٰ دے دیا تھا، عود ابن عوف نے اپنے فیصلے کا اعلان سرکاری ٹی وی پر کیا۔

فوجی کونسل کے سربراہ عود بن عوف نے لیفٹیننٹ جنرل عبدالفتاح عبدالرحمان برہان کو اپنا جانشین نامزد کردیا، فوج کا کہنا ہے کہ 2 سال تک اقتدار میں رہنے کے بعد انتخابات کرائے گی۔

مزید پڑھیں : سوڈان میں مارشل لاء نافذ، ملک چلانے کے لیے عبوری کونسل تشکیل، صدرگرفتار

یاد رہے کہ سوڈانی عوام گزشتہ تین مہینوں نے صدر عمر البشیر کے خلاف مظاہرے کررہے تھے جو آج رنگ لے آئے اور صدر عمر حسن البشیر صدارت سے مستعفی ہوگئے جس کے بعد انہیں فوج نے گرفتار کرکے نظر بند کردیا تھا اور وہ تاحال نظر بند ہیں۔

غیر ملکی میڈیا کا کہنا ہے کہ سوڈان میں فوج نے ملک کے انتظامی امور چلانے کے لیے جنرل عود بن عوف کی سربراہی میں ایک عبوری کونسل تشکیل دے دی ہے، جنرل عود سبک دوش ہونے والے صدر عمر البشیر کے نائب اول اور سوڈان کے وزیر دفاع ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں