امن فورس کے سپاہی کی جگہ پرچا دینے والا استاد گرفتار -
The news is by your side.

Advertisement

امن فورس کے سپاہی کی جگہ پرچا دینے والا استاد گرفتار

برونڈی: صومالیہ میں تعینات امن فورس کے ایک طالب علم سپاہی کی جگہ ان کے ایک استاد نے پرچا دینے کی کوشش کی لیکن پولیس کے ہاتھوں گرفتار ہو گئے۔

تفصیلات کے مطابق صومالیہ کے ملک برونڈی کی پولیس کو خفیہ اطلاع ملی کہ ایک مقامی کالج کا ہیڈ ماسٹر طالب علم کی جگہ خود پرچا دینے کے لیے کمرۂ امتحان جائیں گے، پولیس نے اطلاع پر رات ہی سے امتحانی سینٹر کے پاس ڈیرا جما لیا۔

ہیڈ ماسٹر نے جیسے ہی امتحانی کمرے میں بیٹھ کر پرچا لکھنا شروع کر دیا، سادہ لباس میں موجود پولیس نے انھیں حراست میں لے لیا، استاد کو رنگے ہاتھوں پکڑنے کے لیے برونڈی کی وزیرِ تعلیم بھی موقع پر موجود تھیں۔

طالب علم کی جگہ پرچا دینے والے ہیڈ ماسٹر بن یامین منی رمبونا کا تعلق شمالی بوجمبورا کے بطری ٹیکنکل کالج سے تھا، ان کی گرفتاری کے لیے پولیس نے امتحانی سینٹر کے پاس پوری رات گزاری۔

بن یامین نے پولیس اور امتحانی اہل کاروں کا سامنا کرنے کے بعد اعتراف کیا کہ وہ ایک سپاہی کے لیے پرچا دے رہا ہے، سپاہی کا تعلق صومالیہ میں امن مشن سے تھا۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق ہیڈ ماسٹر الیکٹرانکس کا پرچا دیتے ہوئے گرفتار ہوا، استاد کا کہنا تھا کہ طالب علم یونی ورسٹی میں داخلے کے لیے کالج سے اچھے گریڈ میں پاس ہونا چاہتا تھا۔

صومالیہ: متعدد شوہر رکھنے کا الزام، خاتون سنگ سار کردی گئی

منی رمبونا کے اعترافات کے مطابق امن فورس کے سپاہی نے ڈیوٹی سے واپسی پر انھیں پرچا دینے کے عوض رقم دینے کی ڈیل کی تھی۔

دوسری طرف خاتون وزیرِ تعلیم کا کہنا تھا کہ ہیڈ ماسٹر جو کچھ بتا رہے ہیں وہ سب جھوٹ ہے، کیوں کہ وہ یہ کام پہلے بھی کرتے رہے ہیں۔ ہیڈ ماسٹر کو مزید تفتیش کے لیے پولیس حراست میں ساتھ لے جایا گیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں