The news is by your side.

Advertisement

بھارت: سالگرہ تقریب کے بعد تاجر کی کرونا سے موت، پارٹی شرکا میں خوف

حیدرآباد: بھارتی شہر حیدرآباد میں ایک سالگرہ تقریب کے بعد تاجر کی کرونا وائرس انفیکشن سے موت نے اس پارٹی میں شریک لوگوں میں خوف پھیلا دیا ہے۔

بھارتی میڈیا کا کہنا ہے کہ سالگرہ تقریب کے بعد حیدر آبادی تاجر کی کرونا وائرس سے موت نے پارٹی میں شریک لوگوں میں خوف پیدا کر دیا، پارٹی میں شریک 20 افراد میں کرونا وائرس کی تصدیق بھی ہو گئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق حیدر آباد کے ایک بڑے جیولر پرسان چند بھنڈاری نے 22 جون کو 63 ویں سالگرہ منائی تھی، کرونا وائرس کی وبا کے باوجود تاجر نے بڑی پارٹی منعقد کی اور لوگوں کو دعوت دے دی۔

سالگرہ تقریب میں شہر کے بڑے تاجروں نے شرکت کی، شرکا کی تعداد 100 کے قریب تھی، پارٹی کے دو دن بعد پرسان چند بھنڈاری کو کھانسی اور سانس میں تکلیف پر کارپوریٹ اسپتال لے جایا گیا تو ان کا کرونا ٹیسٹ مثبت آ گیا۔

یہ خبر پارٹی کے شرکا کے لیے دہشت انگیز ثابت ہوئی، اور انھوں نے بھی اپنے کو وِڈ 19 ٹیسٹ کروا لیے جن میں 20 افراد کے کرونا ٹیسٹ مثبت آ گئے۔

بعد ازاں یکم جولائی کو چند دن قبل ہی اپنی 63 واں جنم دن منانے والا تاجر پرسان چند بھنڈاری کرونا وائرس کے آگے ہار مان کر ہلاک ہو گیا۔ اطلاعات کے مطابق اس پارٹی میں شرکت کرنے والا ایک اور جیولر بھی کرونا وائرس کی وجہ سے موت کا شکار ہو چکا ہے۔

دو اموات نے دیگر شرکا کے خوف میں اضافہ کر دیا ہے، پارٹی میں تلنگانہ کی قانون ساز اسمبلی کے ڈپٹی اسپیکر ٹی پدما راؤ بھی شریک تھے، ان کا کو وِڈ 19 ٹیسٹ بھی مثبت آ چکا ہے، جو اب اپنے گھر پر زیر علاج ہیں۔

دل چسپ بات یہ ہے کہ حال ہی میں حیدرآباد دکن میں دکنی زبان میں ایک محاورہ مشہور ہو گیا ہے، ‘کرونا کو لائٹ نککو لیو، نائی تو بیگن میں مل جاتے’، جس کا مطلب ہے کہ اگر کرونا کو سنجیدگی سے نہ لو گے تو مشکل میں پڑ جاؤ گے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں