The news is by your side.

Advertisement

الیکشن کمیشن نے آر ٹی ایس سسٹم کی ناکامی کے الزامات کو سختی سے رد کر دیا

اسلام آباد:  الیکشن کمیشن کے ترجمان نے آر ٹی ایس سسٹم کی ناکامی کے الزامات کو سختی سے رد کرتے ہوئے کہا ہے کہ 5 فیصد نتائج نہ آنے کو آر ٹی ایس کی تاخیر نہیں کہا جاسکتا ہے۔

تفصیلات کے مطابق سابق وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق کے بیان کا ردعمل دیتے ہوئے ترجمان الیکشن کمیشن نے کہا ہے کہ آر ٹی ایس کے ذریعے قومی اسمبلی کے 95 فیصد نتائج ملے، 5 فیصد نتائج نہ آنے پر آر ٹی ایس کی تاخیر نہیں کہا جاسکتا ہے۔

ترجمان الیکشن کمیشن کے مطابق آر ٹی ایس کے ذریعے پنجاب کے 94 فیصد نتائج ملے ہیں، سندھ سے 95 فیصد نتائج موصول ہوئے، کے پی سے 95 فیصد نتائج ملے جبکہ بلوچستان سے 57 فیصد نتائج موصول ہوئے۔

ترجمان الیکشن کمیشن نے اعتراف کیا کہ کچھ پریذائیڈنگ افسران کو آر ٹی ایس کے استعمال میں مشکلات کا سامنا ہے تاہم یہ نہیں کہا جاسکتا کہ آر ٹی ایس سسٹم ناکام ہوگیا ہے۔

واضح رہے کہ خواجہ سعد رفیق نے کہا تھا کہ 52 پریزائیڈنگ افسران نے اب تک اپنے نتائج آر ٹی ایس کو نہیں دئیے، نتائج تبدیل کرنے کی کوشش کا ردعمل سخت ہوگا۔

سعد رفیق کا کہنا تھا کہ اربوں روپے خرچ ہونے کے باوجود آر ٹی ایس سسٹم بیٹھ گیا، آر ٹی ایس کو پونے گھنٹے کی بیماری لاحق ہوئی ہے۔

الیکشن کمیشن نے سعد رفیق کے بیان کا نوٹس لیتے ہوئے کہا تھا کہ کسی کو آر اوز کے کام میں مداخلت کا اختیار نہیں ہے، کوئی امیدوار یا ایجنٹ دباؤ ڈالنے کا بھی حق نہیں رکھتا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں