The news is by your side.

Advertisement

امریکی صدر کی سنگین غلطی؟ یوکرین نے نشاندہی کردی

امریکی صدر جوبائیڈن کی حالیہ سخت بیان بازی نے یوکرین کو پریشان کردیا ہے اور یوکرین کے صدر نے اسے بائیڈن کی سنگین غلطی قرار دیا ہے۔

یوکرین کے صدر وولودیمیر زیلنیسکی نے کہا ہے کہ مغربی میڈیا تاثر دے رہا ہے کہ ٹینک موجود ہیں، ہم حالت جنگ میں ہیں، ہماری فوج سڑکوں پر اتر آئی ہے تو ایسی کوئی بات نہیں، صدر جوبائیڈن اس حوالے سے سخت بیانات دے کر غلطی کررہے ہیں۔

یوکرینی صدر نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے  مغرب سے اپیل کی کہ وہ روس کے ساتھ کشیدگی کے معاملے پر خوف وہراس پیدا نہ کریں کیونکہ اس نے یوکرین کی پہلے سے کمزور معیشت میں غیرملکی سرمایہ کاری کو مزید نقصان پہنچایا ہے، ہمیں اس خوف وہراس کی ضرورت نہیں کیونکہ یوکرین کو اس کی بھاری قیمت ادا کرنی پڑ رہی ہے۔

وولودیمیر زیلنیسکی نے مزید کہا کہ مغرب اور میڈیا جس طرح روس کے ساتھ ہماری کشیدگی کو اچھال رہا ہے اس کی یوکرین کے عوام کو بھاری قیمت ادا کرنا پڑے گی، اس حوالے سے صدر بائیڈن کے بیانات انتہائی غلط ہیں۔

اس وقت یوکرین کی سرحد پر لگ بھگ ایک لاکھ روسی افواج تعینات ہے لیکن زیلینیسکی کا کہنا تھا کہ انہیں اس سے کوئی بڑا خطرہ نظر نہیں آرہا کیونکہ گزشتہ موسم بہار میں بھی روسی فوج اسی طرح موجود تھی۔

واضح رہے کہ امریکی صدر جو بائیڈن نے روس یوکرین تنازعے پر اپنے ایک بیان میں کہا تھا کہ وہ سمجھتے ہیں کہ روس اگلے ماہ پڑوسی ملک پر حملہ کرسکتا ہے جب کہ روسی وزیر خارجہ نے خبروں کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ ماسکو کوئی جنگ نہیں چاہتا۔

اس سے قبل امریکہ یوکرین تنازع کے حوالے سے روس کو متنبہ کرچکا ہے ۔

مزید پڑھیں: یوکرین تنازعہ : امریکہ کی روس کو ایک اور دھمکی

Comments

یہ بھی پڑھیں