سعودی حکومت کی ایجوکیشنل ایکسچینج پروگرام کی معطلی شرمناک ہے، کینیڈا
The news is by your side.

Advertisement

سعودی حکومت کی ایجوکیشنل ایکسچینج پروگرام کی معطلی شرمناک ہے، کینیڈا

ٹورنٹو : کینیڈا کی وزیرخارجہ کرسٹیا فری لینڈ نے سعودی حکومت کی جانب سے ایجوکیشنل ایکسچینج پروگرام کی معطلی کو شرمناک قرار دے دیا ۔

تفصیلات کے مطابق کینیڈا اورسعودی عرب میں سفارتی تناؤ شدت اختیار کرگیا، سعودی حکام کی جانب سے کینیڈا کے لئے پروازیں بند کرنے کے بعد اعلان کیا گیا ہے کہ کینیڈا میں تمام اسکالر شپس، تربیتی اور فیلو شپ پروگرام معطل کیے جا رہے ہیں جو کسی اور ملک منتقل کیے جائیں گے۔

کینیڈا کی وزیرخارجہ کرسٹیا فری لینڈ نے اسکالرشپس بند کرنے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ سعودی عرب کے سخت اقدامات کے باوجود کینیڈا اپنے موقف پرقائم رہے گا۔

میڈیا سے گفتگو میں سعودی طلبا کی امریکہ و برطانیہ منتقلی پر اپنے ردعمل میں کرسٹیا فری لینڈ کا کہنا تھا کہ کینیڈا میں زیرتعلیم سعودی طلباء کو اپنی تعلیم مکمل کرنے سے روکنا شرمناک ہے۔

کرسٹیا فری نے کہا کہ کینیڈا انسانی حقوق کے معاملے پر آواز اٹھاتا رہے گا۔


مزید پڑھیں :  سعودی ایئرلائنزنے ٹورنٹو کےلیے تمام پروازیں معطل کردیں


یاد رہے کہ سعودی عرب نے کینیڈا سے سفیر واپس بلانے کے بعد ٹورنٹو کیلئے سعودی ائیر لائین کی پروازیں معطل کر دیں۔

سعودی عرب کا کہنا ہے کہ وہ کینیڈا کے ساتھ نئے تجارتی اور سرمایہ کاری کے معاہدے بھی روک رہا ہے، وہ اپنے داخلی معاملات میں مداخلت پسند نہیں کرتا۔

واضح رہے کہ کینیڈا نے سعودی عرب میں انسانی حقوق کارکنوں کی گرفتاری پرتشویش ظاہرکی تھی، جسے سعودی عرب نے اندرونی معاملات میں مداخلت قرار دیا تھا۔

جس کے بعد سعودی عرب نے کینیڈین سفیر کو ملک سے بے دخل کرنے کے ساتھ ساتھ کینیڈا سے سعودی سفیر کو بھی واپس بلالیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں