The news is by your side.

Advertisement

اسلام آباد میں کینیڈین خاتون کو ہراساں کرنے کا مقدمہ درج

اسلام آباد : اسلام آباد میں کینیڈین خاتون کو ہراساں کرنے کا مقدمہ درج کرلیا گیا ، آئی جی اسلام آباد نے غیر ملکی خاتون کو ہراساں کرنے والے ملزمان کی 24 گھنٹوں میں گرفتاری کا حکم دے دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں کینیڈین خاتون کو ہراساں کرنے کا مقدمہ تھانہ سہالہ میں درج کر لیا گیا، پولیس کے مطابق ایف آئی آر میں موقف اختیار کیا گیا کہ تھانہ سہالہ کی حدود میں ایک نجی ہاؤسنگ سوسائٹی میں دو لڑکوں نے راستہ روک کر کینیڈین خاتون کو گاڑی میں بیٹھنے کو کہا تھا۔

ایف آئی آر میں کہا گیا خاتون کے مطابق ملزمان نے گاڑی کا پیچھا کیا اور مسلسل ہراساں کرتے رہے اور ڈرائیور سے بار بار منزل کا پوچھتے رہے، خاتون نے ملزمان کے ڈر سے ایک شاپنگ سینٹر میں چھپ کر جان بچائی۔

آئی جی اسلام آباد نے کینیڈین خاتون کوہراساں کرنے کا نوٹس لیتے ہوئے ہراساں کرنے والے ملزمان کو 24 گھنٹوں میں گرفتار کرکے مقدمہ درج کرنے کا حکم دیا۔

متاثرہ خاتون نے الزام عائد کیا کہ جب ہیلپ لائن 15 پر فون کیا گیا تو کہا گیا تھانے میں فون کریں اور اپنی شکایت کی درخواست جمع کرائیں، جس کے بعد پاکستان سیٹیزن پورٹل پر شکایت درج کرائی، پاکستان سیٹیزن پورٹل سے متعلقہ شکایت ایس پی کو بھجوائی گئی۔

خیال رہے گذشتہ روز وزیر مملکت برائے داخلہ نے کہا تھا کہ ہمارے لیے ہر شہری قابل احترام ہے، تحفظ کی فراہمی ریاست کی ذمہ داری ہے، نئے پاکستان میں کسی سے امتیازی سلوک روا نہیں رکھا جائے گا۔

مزید پڑھیں : ملتان : مسافرکی بس ہوسٹس سے بدتمیزی اور دھمکیوں کی ویڈیو وائرل

یاد رہے چند روز قبل اسلام آباد سے لاہور جانے والی مسافر بس کی ایئر ہوسٹس کو دھمکانے اور ہراساں کرنے کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوگئی تھی ، مذکورہ مسافر نے خاتون سے بد تمیزی کی اور بس سے باہر پھینکنے کی دھمکیاں دیں جس پر بس ہوسٹس آبدیدہ ہوگئی تھی ، بس میں موجود دیگر مسافروں نے سمجھانے کوشش کی تاہم مسافر اپنی روش سے باز ںہ آیا اور خود کو سرکاری افسر ظاہر کرکے سنگین نتائج کی دھمکیاں دیتا رہا۔

بعد ازاں مسافروں نے موٹر وے پولیس کو کال کر کے بلا لیا، اور اس کی شکایت درج کراتے ہوئے کہا تھا کہ اس کے ساتھ سفر نہیں کرسکتے جس پر مذکورہ مسافر کو بس سے اتار دیا گیا تھا۔

خیال رہے گزشتہ سال وفاقی محتسب نے اپنی رپورٹ میں بتایا تھا کہ 4 سال میں ہراساں کرنے کے 220 واقعات رپورٹ ہوئے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں