The news is by your side.

Advertisement

پاک سرزمین پارٹی کی مرکزی قیادت کے خلاف مقدمہ درج

کراچی: پاک سرزمین پارٹی کو بجلی اور پانی کی فراہمی کے لیے نکالے جانے والا ملین مارچ مہنگا پڑ گیا، شاہراہ فیصل پر ریلی نکالنے کے خلاف مصطفیٰ کمال، انیس قائم خانی سمیت مرکزی قیادت کے خلاف مقدمہ درج کر لیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق دو روز قبل پاک سرزمین پارٹی نے شہر کے مسائل کو حل نہ ہونے پر سندھ حکومت کے خلاف ملین مارچ کا انعقاد کیا تھا، ایف ٹی سی کے قریب  شاہراہ فیصل کا دوسرا ٹریک بند کرنے پر پولیس نے پی ایس پی کارکنان پر لاٹھی چارج کیا اور شیلنگ کی۔

وزیراعلیٰ ہاؤس جانے کی ضد مصطفیٰ کمال کو مہنگی پڑی، پولیس افسران سے مذاکرات میں ناکامی کے بعد پولیس نے پی ایس پی کے خلاف کریک ڈاؤن کیا تو سربراہ ، مرکزی قیادت اور کارکنان کو گرفتار کیا اور لیاری کے تھانے منتقل کیا تاہم دو گھنٹے بعد تمام افراد کو رہا کردیا گیا۔

آج ایس ایچ او صدر کی مدعیت میں پی ایس پی رہنماؤں کے خلاف صدر تھانے میں مقدمہ درج کروادیا گیا جس میں مصطفیٰ کمال، انیس قائم خانی، رضا ہارون، ڈاکٹر صغیر احمد و دیگر کو نامزد کیا گیا ہے۔

صدر تھانے میں درج ہونے والے مقدمے میں لاؤڈ اسپیکر ایکٹ، دفعہ 144 کی خلاف ورزی اور ہنگامہ آرائی کی دفعات بھی شامل کی گئی ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں